Friday , September 22 2017
Home / Top Stories / راشٹرپتی بھون میں نئے مکین کا استقبال، سبکدوش صدر کی وداعی سلامی

راشٹرپتی بھون میں نئے مکین کا استقبال، سبکدوش صدر کی وداعی سلامی

قومی روایات اور شان و شوکت کا مثالی مظاہرہ، کووند کی آمد اور پرنب مکرجی کی رخصت کے جذباتی مناظر
نئی دہلی 25 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) آزاد ہند کی تاریخ میں 14 ویں مرتبہ آج ایک نئے صدر راشٹرپتی بھون پہونچے۔ روایات اور شان و شوکت کے منفرد امتزاج سے مزین اس عظیم الشان تقریب کا آغاز آج صبح رام ناتھ کووند کی اکبر روڈ پر واقع رہائش گاہ پر دستک سے ہوا۔ وہ صدرجمہوریہ کے ملٹری سکریٹری میجر جنرل انیل کھوسلہ تھے جنھوں نے 71 سالہ کووند اور ان کی شریک حیات سویتا کو راشٹرپتی بھون مدعو کیا جہاں صدرجمہوریہ پرنب مکرجی اپنے جانشین کی آمد پر استقبال کے منتظر تھے۔ تاہم چند ہی گھنٹوں میں ان دونوں کے کردار یکلخت برعکس ہوگئے اور نئے صدرجمہوریہ کووند نے اپنے پیشرو پرنب مکرجی کو راشٹرپتی بھون سے وداع کیا۔ قبل ازیں منتخب صدر کووند اور سبکدوش صدر پرنب مکرجی عظیم الشان راشٹرپتی بھون کی فصیل پر پہونچے جہاں اُنھیں سلامی کے شہ نشین پر پہونچایا گیا۔ پرنب مکرجی نے صدارتی باڈی گارڈس اور ہندوستانی فوج کے دستہ سے وداعی سلامی لی اور کووند اُن کے بازو کھڑے رہے۔ بعدازاں مکرجی اور ان کے جانشین کووند ایک سیاہ لیموزین کار کے ذریعہ رائینا ہل سے پارلیمنٹ کے سنٹرل ہال روانہ ہوئے۔ اس کار میں مکرجی دائیں اور کووند بائیں جانب تھے۔

زری کارچوب سے مزین نیلی پگڑیوں کے ساتھ روایتی سفید یونیفارم میں ملبوس صدارتی بارڈی گارڈس گھوڑوں پر سوار تھے۔ راشٹرپتی بھون سے پارلیمنٹ تک تین مسلح خدمات کے 1000 جوان سڑک کی دونوں جانب متعین تھے جنھوں نے صدر اور دفاعی فورسیس کے سپریم کمانڈر کو روایتی ’ہراز سلام‘ پیش کیا۔ جیسے ہی یہ جلوس پارلیمنٹ کے پانچویں گیٹ پر پہونچا وہاں ان کے منتظر نائب صدرجمہوریہ حامد انصاری، لوک سبھا کی اسپیکر سمترا مہاجن اور سپریم کورٹ کے چیف جسٹس جے ایس کھیہر نے صدر پرنب مکرجی اور منتخب صدر رام ناتھ کووند کا استقبال کیا جنھیں بعدازاں سنٹرل ہال لیجایا گیا۔ کووند نے اپنی حلف برداری کے بعد سنٹرل ہال میں موجود قائدین سے ملاقات کی اور صدارتی لیموزین کے ذریعہ راشٹرپتی بھون روانہ ہوگئے۔ اس مرتبہ لیموزین میں سبکدوش صدر مکرجی بائیں اور نئے صدر کووند دائیں جانب بیٹھے رہے۔ صدارتی قافلہ کی پارلیمنٹ سے راشٹرپتی بھون کو روانگی کے موقع پر انتہائی خوشگوار فضاء دیکھی گئی۔ راجتھ کے سیاہ ٹارمیک کی غیرمعمولی توجہ کے ساتھ صفائی کی گئی تھی اور صدارتی باڈی گارڈس نے ہلکی بوندا باندی کے دوران فوجی روایت کے مطابق مارچ کیا۔ مکرجی اور کووند راشٹرپتی بھون پہونچے اور نئے صدر نے رجسٹر میں دستخط کے ساتھ جائزہ حاصل کرلیا۔ کووند جائزہ حاصل کرنے کے بعد صدارتی بگی میں راشٹرپتی بھون کے سبزہ زار پہونچے۔ پرنب مکرجی نے صدارتی بگی کی روایت کا احیاء کیا تھا۔ یہ بگی ایک صدارتی سواری ہے جس پر طلائی ملمع کاری سے مزین قومی نشان اشوکا کی لاٹ ہوتی ہے اور اس میں چھ گھوڑے جوتے جاتے ہیں۔ کووند گارڈ آف آنر کے معائنہ کرنے کے بعد اندر روانہ ہوگئے اور وہاں سے صدر پرنب مکرجی کو بارہ دری پر کھڑی بگی تک لے گئے جہاں سبکدوش صدر مکرجی کو اس عہدہ کا آخری گارڈ آف آنر پیش کیا گیا۔ بعدازاں صدارتی لیموزین کار کے ذریعہ کووند اپنے پیشرو کے ساتھ ان (پرنب مکرجی) کی نئی رہائش گاہ 10 راجہ جی مارگ روانہ ہوئے جہاں سابق صدرجمہوریہ اے پی جے عبدالکلام رہا کرتے تھے۔ پرنب مکرجی اب اس رہائش گاہ کے نئے مکین ہوں گے۔

TOPPOPULARRECENT