Friday , May 26 2017
Home / ہندوستان / رام مندر پر سمجھوتہ کیلئے سبرامنیم سوامی کا زور دونوں فریق میں اتفاق رائے نہ ہو تو عدالت کا فیصلہ قبول

رام مندر پر سمجھوتہ کیلئے سبرامنیم سوامی کا زور دونوں فریق میں اتفاق رائے نہ ہو تو عدالت کا فیصلہ قبول

لکھنؤ ۔ 4 مئی (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی نے آج کہا کہ ایودھیا میں متنازعہ اراضی کے مسئلہ کو حل کرنے میں اگر دونوں فریق اسی اتفاق رائے پر پہنچنے میں ناکام ہو تو رام مندر مسئلہ پر اگر مسلمان سمجھوتہ کیلئے تیار نہ ہوں تو عدالت کا فیصلہ ہی قابل قبول ہوگا۔ اس معاملہ میں قانونی کامیابی کا یقین ظاہر کرتے ہوئے سبرامنیم سوامی نے کہا کہ اگر وہ لوگ (مسلمان) سمجھوتہ نہیں کرنا چاہتے ہیں تو عدالت موجود ہے اور ہم الہ آباد ہائیکورٹ میں یہ کیس پہلے ہی جیت چکے ہیں جس میں عدالت نے یہ رولنگ دی ہیکہ بھگوان رام کی جائے پیدائش عقائد کے مطابق اس مقام کے مرکزی حصہ پر ہے۔ سبرامنیم سوامی نے چیف منسٹر اترپردیش ادتیہ ناتھ یوگی سے ملاقات کے بعد کہا کہ اگر آپ ہندو مسلم اتحاد کی بات کررہے ہیں تو ایک مسجد کہیں بھی بنائی جاسکتی ہے لیکن بھگوان رام کے جائے پیدائش پر یہ ہرگز تعمیر نہیں کی جاسکتی۔ تاہم انہوں نے ادتیہ ناتھ کے ساتھ اپنی ملاقات کی تفصیلات بتانے سے انکار کیا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT