Tuesday , October 17 2017
Home / کھیل کی خبریں / رانچی ہندوستان کا 26 واں ٹسٹ سنٹر ، دھونی کی کمی

رانچی ہندوستان کا 26 واں ٹسٹ سنٹر ، دھونی کی کمی

رانچی ۔ 14 مارچ ۔(سیاست ڈاٹ کام) عوام کے ذہنوں میں مہندر سنگھ دھونی کی وہ تصویر ہنوز تازہ ہے جب وہ یہاں اپنے آبائی میدان پر باجے بجاتے ہوئے اور ناچتے ہوئے دیکھے گئے تھے ، لیکن اب رانچی کا یہ میدان رواں ہفتے ہندوستان کا 26 واں ٹسٹ میزبان کی حیثیت حاصل کررہا ہے ، لیکن اس موقع پر مہندر سنگھ دھونی موجود نہیں ہوں گے کیونکہ وہ وجئے ہزارے ٹورنمنٹ میں اپنی ٹیم کی نمائندگی کررہے ہیں جوکہ کوارٹر فائنل مقابلے کیلئے اس وقت دہلی میں موجود ہے۔ دو دن بعد یہاں رانچی کے میدان میں ہندوستان اور آسٹریلیا کے درمیان رواں سیریز کا تیسرا مقابلہ شروع ہوگا تو یہ میدان ہندوستان کا ایسا 26 واں میدان ہوگا جو ٹسٹ میچ کی میزبانی کررہا ہے ۔ 2014 ء میں مہندر سنگھ دھونی نے اپنے محدود اوور کے کیرئیر کو طول دینے کی غرض سے ٹسٹ کرکٹ سے کنارہ کشی اختیار کی ہے لہذا وہ پہلے ہی ٹسٹ ٹیم کا حصہ نہیں ہے اور اب اپنے آبائی میدان کو جب ٹسٹ کی میزبانی کا اعزاز حاصل ہورہا ہے وہ مقامی افراد کے درمیان موجود نہیں ہوں گے ۔ دھونی کے بچپن کے کوچ کیشو بنرجی نے خبررساں ایجنسی پی ٹی آئی سے اظہارخیال کرتے ہوئے کہاکہ رانچی میں ٹسٹ ٹیم کی میزبانی کا فیصلہ دراصل دھونی کے اعزاز میں ہی کیا گیا تھا لیکن وہ اس وقت وجئے ہزارے ٹورنمنٹ میں اپنی ڈومیسٹک ٹیم کی نمائندگی کررہے ہیں جوکہ دہلی میں موجود ہے، لیکن ہم اُمید کرتے ہیں کہ دھونی کا یہ آبائی میدان ہندوستان کے لئے خوش قسمت ثابت ہوگا اور وہ آسٹریلیا کے خلاف کامیابی کے ذریعہ سیریز میں سبقت حاصل کرے گی ۔ علاوہ ازیں ہند۔ آسٹریلیا تیسرے ٹسٹ کے یہاں انعقاد کے ضمن میں دھونی کے اسکول الاماں ماتر جواہر ودیا مندر کے منجملہ دیگر اسکولوں کے 10,000 طلبہ کیلئے مفت پاسیس فراہم کئے گئے ہیں اور اُمید ہے کہ روزآنہ ہزاروں کی تعداد میں اسکولی طلبہ ٹسٹ میچ کے مشاہدہ کیلئے میدان پر موجود رہیں گے ۔ جھارکھنڈ اسٹیٹ کرکٹ اسوسی ایشن کے سکریٹری دبیاشیش چکراورتی نے میڈیا سے کہا کہ صرف دھونی ہی یہاں مشہور کرکٹر ہیں ، جن کو ایکشن میں دیکھنے کیلئے شائقین کی ایک بڑی تعداد میدان کا رُخ کرتی ہے ، تاہم اس تاریخی موقع پر وہ موجود نہیں ہوں گے ، جس کے باوجود ہم اُمید کرتے ہیں کہ روزآنہ مقابلے کے مشاہدے کیلئے 30,000 شائقین میدان کا رُخ کریں گے ۔ 18 جنوری 2013 ء کو جب پہلی مرتبہ اس میدان نے ونڈے کی میزبانی کا اعزاز حاصل کیا تھا تو ہند۔ انگلینڈ ونڈے سے قبل ایک کلچرل پروگرام منعقد کیا گیا تھا ۔ انھوں نے مزید کہاکہ اس مرتبہ دھونی اس لئے موجود نہیں ہے کیونکہ جھارکھنڈ وجئے ہزارے ٹرافی کے کوارٹر فائنل میں پہونچ چکا ہے اور ہمیں اُمید ہے کہ دھونی یہ ٹرافی کے ساتھ شہر واپسی کریں گے ۔

TOPPOPULARRECENT