Saturday , August 19 2017
Home / دنیا / راکھین ریاست میں فوجی کارروائی ختم : حکومت میانمار

راکھین ریاست میں فوجی کارروائی ختم : حکومت میانمار

ینگون، 16 فروری (سیاست ڈاٹ کام) میانمار کی فوج نے ملک کی شورش زدہ راکھین ریاست میں اپنی کارروائی ختم کردی ہے ۔ وہاں چار ماہ سے اقلیتی مسلمانوں کے خلاف مہم چلائی جارہی تھی۔ جس کے بارے میں اقوام متحدہ کا کہنا تھا کہ یہ انسانیت کے خلاف جرائم اور نسلی صفائے کے مترادف ہے ۔9اکتوبر کو بنگلہ دیشی سرحد کے نزدیک سلامتی چوکیوں پر حملوں میں 9 پولیس اہلکار ہلاک ہوئے تھے ۔ اس کے بعد سے سیکورٹی آپریشن چل رہا تھا۔ اقوام متحدہ کے مطابق تب سے اب تک 69 ہزار روہنگیا مسلمانوں نے برما سے فرار ہوکر بنگلہ دیش میں پناہ لی ہے ۔اس تشدد پر ایک مرتبہ پھر ساری دنیا سے نکتہ چینی کی گئی ہے کہ میانمار کی لیڈر آنگ سان سوچی نے مسلم اقلیت پر ہونے والے ظلم وستم کو روکنے کے لئے کچھ نہیں کیا ہے ۔نوبل انعام یافتہ سوچی کی قیادت والی حکومت نے راکھین میں ہونے والی انسانی حقوق کی پامالیوں سے انکار کیا ہے ۔ وہاں روہنگیا مسلمانوں کو اجتماعی طور سے ہلاک کیا گیا ہے اور ان کی اجتماعی عصمت دری کی گئی ہے ۔ نیز کہا کہ وہاں جو مہم چلائی جارہی ہے وہ بغاوت فرو کرنے کی قانونی کارروائی ہے ۔بودھ اکثریت والے برما میں روہنگیا مسلمانوں کے ساتھ کئی نسلوں سے تعصب برتا جارہا ہے ۔ انہیں بنگلہ دیش سے آئے غیر قانونی مہاجر سمجھا جاتا ہے ۔ انہیں شہریت نہیں دی گئی ہے اور اسی وجہ سے کوئی شہری حقوق بھی حاصل نہیں ہیں۔ان میں سے 11لاکھ تو شمال مغربی میانمار میں نسل پرستی جیسے حالات میں رہنے پر مجبور ہیں۔

پاکستان خطرناک ترین ملک
سابق سی آئی اے عہدیدار
واشنگٹن ۔ 16 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) سی آئی اے کے سابق عہدیدار نے آج ایک متنازعہ بیان دیتے ہوئے پاکستان کو دنیا کا خطرناک ترین ملک قرار دیا جسکی وجوہات انہوں نے یہ بتائی کہ ملک کی معیشت زوال پذیر ہے جبکہ دہشت گردی میں کوئی کمی واقع نہیں ہوئی ہے اور سب سے اہم بات یہ ہیکہ پاکستان نیوکلیئر توانائی کا حامل ملک ہے۔ ان تمام پہلوؤں کا اگر جائزہ لیا جائے تو یہ بات کہی  جاسکتی ہیکہ دنیا میں اگر اس وقت کوئی سب سے زیادہ خطرناک ملک ہے تو وہ پاکستان ہے۔ اسلام آباد میں سی آئی اے کے سابق اسٹیشن چیف کیوین ہلبرٹ نے کہا کہ پاکستان کی ’’ناکامی‘‘ کا اثر پوری دنیا پر مرتب ہوسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT