Tuesday , July 25 2017
Home / سیاسیات / راہول گاندھی کی قیادت میں اپوزیشن اتحاد پر زور

راہول گاندھی کی قیادت میں اپوزیشن اتحاد پر زور

نوٹ بندی، مسائل سے توجہ ہٹانے مودی حکومت کی کوشش: نتیش کمار

نئی دہلی ۔ 10 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) بہار کے چیف منسٹر نتیش کمار نے بی جے پی کے خلاف اپوزیشن جماعتوں میں ایک مناسب ایجنڈہ پر مبنی زیادہ سے زیادہ اتحاد کی ضرورت ہے۔ انہوں نے نوٹ بندی کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ کسی مؤثر تیاری کے بغیر یہ قدم اٹھایا گیا تھا۔ نتیش کمار جنہوں نے ابتداء میں نوٹ بندی کی تائید کی تھی، پہلی مرتبہ آج اس فیصلہ کی مخالفت کی اور کہا کہ کسی تیاری کے بغیر یہ قدم اٹھایا گیا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ بی جے پی اور اس کی حکومت وقفہ وقفہ سے نئی تشریحات بیان کرتے ہوئے اس مسئلہ سے عوام کی توجہ ہٹانے کے حربے استعمال کرنے میں مصروف ہے۔ یہاں یہ بات بھی نمایاں اہمیت کی حامل ہے کہ نتیش کمار اب ایسا محسوس ہوتا ہی کہ قومی سطح پر راہول گاندھی کی قیادت سے گریز کرنا نہیں چاہتے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے نائب صدر کو اپوزیشن کیلئے ایک مناسب ایجنڈہ بنانے کے عمل کی قیادت کرنا چاہئے اور بی جے پی کو یہ کام کرنے کی اجازت نہیں دی جانی چاہئے۔ اپوزیشن اتحاد سے متعلق نتیش کمار کے تبصروں کو سی پی آئی (ایم) کے جنرل سکریٹری سیتارام یچوری کی تائید حاصل ہوئی ہے، جنہوں نے کہا کہ یہ اتحاد شخصیات پر نہیں بلکہ ایک مشترکہ پروگرام کی بنیاد پر کیا جانا چاہئے۔ یہ قائدین آج یہاں سینئر کانگریس لیڈر پی چدمبرم کی تحریر کردہ کتاب ’’اپوزیشن میں نڈر‘‘ کی رسم اجراء کے موقع پر ایک پیانل مذاکرہ میں حصہ لے رہے تھے۔ یہ کتاب دراصل انڈین ایکسپریس میں چدمبرم کے شائع شدہ مضامین کا دوسرا مجموعہ ہے۔ اس تقریب میں سابق وزیراعظم منموہن سنگھ اور مختلف جماعتوں کے کئی قائدین نے شرکت کی۔ نوٹ بندی پر نریندر مودی اور ان کی حکومت پر منموہن سنگھ کے ایک تنقیدی حملے سے بھی نتیش کمار نے تائید کی جس میں انہوں (ڈاکٹر سنگھ) نے نوٹ بندی کے اقدام کو ایک یادگار اور تاریخی انتظامی ناکامی قرار دیا تھا۔ نتیش کمار نے کہا کہ ’’دراصل کسی مؤثر تیاری کے بغیر نوٹ بندی کا فیصلہ کیا گیا تھا‘‘۔ بہار کے چیف منسٹر نے کہا کہ انہوں نے فوری طور پر اس فیصلہ کا خیرمقدم محض اس لئے کیا تھا کہ صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے کالے دھن، رشوت ستانی اور جعلی کرنسی کے خاتمہ کے مقاصد پر مبنی اعلانات کے ساتھ اٹھائے گئے اس قدم کی تائید کی تھی۔ نتیش کمار نے جو جے ڈی (یو) کے صدر بھی ہیں کہ ’’لیکن وہ (بی جے پی اور مرکزی حکومت) چونکہ بحث کا رخ موڑ دینے کے ماہرین بھی ہیں چنانچہ اب ’’کیش لیس معاشرہ‘‘ کے نام پر تشریحات بدل رہے ہیں جو ہندوستان میں ناممکن ہے۔ نتیش کمار نے زعفرانی جماعت کے خلاف جارحانہ تیور اپناتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کی قیادت میں این ڈی اے حکومت اب ایک کے بعد دیگر مسائل کو موضوع بنارہی ہے کیونکہ عوام میں پیش کرنے کیلئے اس کے پاس اپنی کوئی کامیابی یا کارنامہ نہیں ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT