Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / راہول گاندھی 27 اگسٹ کو عثمانیہ یونیورسٹی کا دورہ کرینگے

راہول گاندھی 27 اگسٹ کو عثمانیہ یونیورسٹی کا دورہ کرینگے

حیدرآباد /7 اگست ( سیاست نیوز ) نائب صدر کانگریس راہول گاندھی کے دورہ تلنگانہ کو قطعیت دے دی گئی ہے ۔ وہ 27 اگست کو عثمانیہ یونیورسٹی اور 28 اگست کو ورنگل کا دورہ کریں گے ۔ عثمانیہ یونیورسٹی طلبہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے آج صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کپیٹن اتم کمار ریڈی ورکنگ پرسیڈنٹ ملویٹی وکرامارک کے ہمراہ دہلی پہونچکر راہول گاندھی سے ملاقات کی ۔ اس موقع پر سابق وزیر ڈی کے ارونا رکن اسمبلی مسٹر سمپت کمار طلبہ تنظیم این ایس یو آئی کے قومی سکریٹری عامر جاوید کے علاوہ دوسرے موجود تھے ۔ عثمانیہ یونیورسٹی کے طلبہ نے راہول گاندھی کو بتایا کہ طلبہ نے تلنگانہ کی تحریک میں انتہائی اہم رول ادا کیا ۔ اپنی تعلیم کی پرواہ نہیں کی اور ملازمتوں کو ٹھکرایا یہاں تک کہ سینکڑوں طلبہ و نوجوانوں نے جان کی قربانی دی ہے ۔ تحریک کے دوران پولیس لاٹھی کا سامنا کیا جھوٹے مقدمات کے تحت جیل گئے تحریک میں طلبا کی تائید حاصل کرنے والی ٹی آر ایس اقتدار حاصل کرتے ہی مخالف طلبا پالیسیوں پر عمل کر رہی ہے ۔ یونیورسٹی کے طلبہ پر کئی مرتبہ لاٹھی چارج ہوا ۔ ملازمتوں کی فراہمی میں بے روزگار نوجوانوں کی بجائے کنٹراکٹ ملازمین کی خدمات کو مستقل کرکے نوجوانوں سے ناانصافی کی جارہی ہے ۔ طلبہ کے مسائل سننے وہ ( راہول ) عثمانیہ یونیورسٹی کا دورہ کریں ۔ راہول گاندھی نے طلبا کی دعوت کو قبول کرکے 27 اگست کو عثمانیہ یونیورسٹی کا دورہ کرنے سے اتفاق کیا ۔ صدر تلنگانہ کانگریس اتم کمار ریڈی نے کہا کہ ٹی آر اکے انتخابی منشور میں جو بھی وعدے کئے گئے ان میں ایک بھی پورا نہیں کیا گیا ہے جس کی وجہ سے ٹی آر ایس عوامی اعتماد سے محروم ہوچکی ہے ۔ تلنگانہ کانگریس حکومت کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف احتجاج کے ذریعہ شعور بیدار کر رہی ہے ۔ 4 اگست کو اندراماں ہاوزنگ بلز کے بقایاجات کی عدم اجرائی کے خلاف دھرنے منظم کئے گئے ۔ این ایس یو آئی قومی سکریٹری عامر جاوید نے کہا کہ ٹی آر ایس نے 12 فیصد مسلم تحفظات فراہم کرنے کا مسلمانوں سے وعدہ کیا تاہم اقتدار کے 14 ماہ کے باوجود وعدے کو نہیں نبھایا ۔ راہول نے اس مسئلہ پر مسلمانوں کا ردعمل کیا ہونے کا عامر جاوید سے استفسار کیا تو انہوں نے بتایا کہ مسلمانوں میں حکومت کے خلاف ناراضگی ہے ۔ ملوبٹی وکرامارک نے کہا کہ سماج کے تمام طبقات سے تلنگانہ میں ناانصافی ہو رہی ہے ۔ حکومت وعدوں کی تکمیل میں ناکام ہے کسان خودکشی کر رہے ہیں ۔ ایس سی طبقہ کو فی خاندان 3 ایکر اراضی دینے اور غریب عوام کو ڈبل بیڈروم فلیٹ دینے کا وعدہ کیا گیا اس پر عمل آوری نہیں ہوئی ۔

TOPPOPULARRECENT