Friday , October 20 2017
Home / Top Stories / رضائے الٰہی کو مقصد حیات بناتے ہوئے زندگی گذارنے پر زور

رضائے الٰہی کو مقصد حیات بناتے ہوئے زندگی گذارنے پر زور

دونوں شہروں میں عید الفطر خشوع و خضوع کے ساتھ منائی گئی ، عیدگاہوں و مساجد میں علماء کرام کا خطاب
حیدرآباد 8 جولائی (سیاست نیوز) دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں عیدالفطر جوش و خروش کے ساتھ سخت صیانتی انتظامات کے درمیان منائی گئی۔ عیدالفطر کے موقع پر عیدگاہوں اور شہر کی بڑی مساجد کے قریب پہلی مرتبہ سخت سکیورٹی انتظامات دیکھے گئے۔ نماز عیدالفطر کے لئے سب سے بڑا اجتماع عیدگاہ میر عالم پر دیکھا گیا جہاں لاکھوں مسلمانوں نے نماز عیدالفطر ادا کی۔ عیدگاہ میر عالم کے اطراف و اکناف کے علاقوں میں بھی سخت سکیورٹی انتظامات کئے گئے تھے۔ شہر کی مختلف مساجد و عیدگاہوں میں نماز عیدالفطر کی ادائیگی کے بعد رحمت والی بارش کے لئے خصوصی دعائیں کی گئیں۔ مدینہ منورہ میں ہوئے خودکش حملے کی مذمت کرتے ہوئے علمائے کرام نے اِن حملوں کے سازشی عناصر کو واجب القتل قرار دیا۔ مولانا محمد حسام الدین ثانی جعفر پاشاہ نے عیدگاہ میر عالم میں فضائل عیدالفطر بیان کرتے ہوئے کہاکہ مدینہ منورہ میں مسجد نبوی ﷺ کے قریب ہوئے دھماکہ نے عالم اسلام کی روح کو زخمی کیا ہے۔ اُنھوں نے بتایا کہ جس کسی ظالم نے یہ حرکت کی ہے وہ قتل کا مستحق ہے۔ نبی کریم صلی اللہ علیہ و سلم کی شان میں مسلمان بے ادبی و گستاخی قطعی برداشت نہیں کرسکتا اور نہ ہی اصحاب رسول ﷺ کی شان میں کی جانے والی گستاخیوں پر مسلمان خاموش تماشائی بنا رہے گا۔ مولانا محمد حسام الدین ثانی جعفر پاشاہ نے بتایا کہ اللہ کے رسول اور اصحاب رسول ﷺ سے بغض رکھنے والوں کو کہیں بھی نجات نہیں ہے۔ ماہِ رمضان المبارک کے دوران کی گئی عبادتوں کی قبولیت کے لئے دعا کرتے ہوئے اُنھوں نے کہاکہ رمضان کا مہینہ گزر چکا ہے لیکن ہمیں اِس بات کا محاسبہ کرنے کی ضرورت ہے کہ ہم نے اِس کا حق کس حد تک ادا کیا ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ کوئی طاقت ہندوستانی مسلمانوں کو نقصان پہنچانے کا منصوبہ تیار نہیں کرسکتی کیوں کہ اِن منصوبوں کے خلاف اُٹھ کھڑے ہونے کی قوت ہم میں موجود ہے۔ مولانا جعفر پاشاہ نے بتایا کہ اسلاف نے خون بہاکر ملک کی آزادی و ترقی میں کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ اُنھوں نے اللہ کی راہ میں کئے جانے والے کاموں کی تشہیر سے اجتناب کی تلقین کرتے ہوئے بتایا کہ اللہ رب العزت کو راضی کرنے میں ہی مسلمان کی عید ہوتی ہے۔ اِسی لئے رضائے الٰہی کو مقصد حیات بناتے ہوئے زندگی گزارنے کی ضرورت ہے۔ ڈاکٹر سیف اللہ شیخ الادب جامعہ نظامیہ نے اِس موقع پر اپنے خطاب کے دوران کہاکہ نوجوانوں کی صحیح تربیت کے لئے یہ ضروری ہے کہ اُنھیں انٹرنیٹ کے صحیح استعمال کے اُصول سے واقف کروایا جائے۔ اُنھوں نے نوجوانوں کو جذباتیت کا شکار نہ ہونے کا مشورہ دیتے ہوئے کہاکہ والدین نسل کی صحیح تربیت کے لئے توجہ مرکوز کریں تاکہ آئندہ نسلوں کے ایمان کی سلامتی کو یقینی بنایا جاسکے۔ ڈاکٹر سیف اللہ نے ماہ رمضان المبارک میں ہوئی نفس اور روح کی تربیت کو سال بھر برقرار رکھنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہاکہ جو تربیت اِس ماہِ مبارک کے ذریعہ کی گئی ہے اُسے برقرار رکھنے کے لئے ہمیں نماز پنجگانہ اور طہارت قلوب پر توجہ مرکوز کرنی چاہئے۔ عیدگاہ میر عالم پر نماز عیدالفطر کی امامت مولانا حافظ محمد رضوان قریشی خطیب و امام مکہ مسجد نے کی۔ اِس موقع پر عیدگاہ کے قریب محکمہ جات پولیس، برقی، آبرسانی، بلدیہ و عمارات و شوارع کے خصوصی کیمپس نصب کئے گئے تھے جہاں سے متعلقہ محکمہ جات کے عہدیداران ماتحتین کو ہدایات جاری کررہے تھے۔ کمشنر پولیس مسٹر ایم مہندر ریڈی کے ہمراہ مسٹر وی ستیہ نارائنا ڈپٹی کمشنر پولیس ساؤتھ زون، مسٹر کے بابو راؤ ایڈیشنل ڈی سی پی کے علاوہ دیگر اعلیٰ عہدیدار صیانتی انتظامات کی راست نگرانی کررہے تھے۔ مسٹر آنند سپرنٹنڈنگ انجینئر محکمہ برقی ساؤتھ زون کی راست نگرانی میں محکمہ برقی کے عہدیدار سرگرم عمل رہے۔ اِسی طرح دیگر محکمہ جات سے تعلق رکھنے والے عہدیداروں نے بھی انتظامات کو بہتر بنانے کی کوشش کی۔ اِس کے علاوہ عیدگاہ بالامرائی، عیدگاہ مادنا پیٹ، عیدگاہ اُجالے شاہ، تاریخی مکہ مسجد، شاہی مسجد باغ عامہ، جامع مسجد چوک، ایکمینار مسجد میں نماز عیدالفطر کے لئے وسیع و عریض انتظامات دیکھے گئے۔ عیدگاہ اُجالے شاہ میں نماز عیدالفطر سے قبل مولانا خالد سیف اللہ رحمانی نے فضائل عید بیان کئے۔ تاریخی عیدگاہ گنبدان قطب شاہی قلعہ گولکنڈہ میں مولانا قاری سید متین علی شاہ قادری خطیب و امام نے عید الفطر کے موقع پر کثیر اجتماع سے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ عید انعام و اکرام کا دن ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عید اس کی ہے جس سے رب راضی ہوگیا ۔ مولانا نے مسلمانوں کو تلقین کی کہ وہ رمضان کے بعد بھی عبادتوں کا سلسلہ جاری و ساری رکھیں ۔ انہوں نے کہا کہ آپسی اتحاد و اتفاق کو مزید مستحکم بنائیں ۔ انہوں نے عین عید الفطر سے ایک دن قبل مدینہ منورہ میں دھماکہ کی مذمت کی اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مدینہ منورہ مسلمانوں کا ایک مقدس مقام ہے جہاں پر آداب و احترام ہر ایک کے لیے لازمی ہے ۔ اس کے تقدس کو پامال نہیں کیا جاسکتا ۔ انہوں نے کہا کہ مدینہ منورہ کی محبت مومن کی فطرت میں داخل ہے ۔ خطیب و امام عیدگاہ گنبدان قطب شاہی نے اپنے سلسلہ خطاب کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ حضور اکرمؐ نے دعا فرمائی کہ اے اللہ مکہ مکرمہ میں جو برکت رکھی ہے اس سے چار درجہ اضافہ برکت مدینہ منورہ میں رکھ دے ۔ مدینہ منورہ کی مٹی اور گرد و غبار اور خاک میں بھی شفاء کاملہ ہے ۔ دہشت گردوں نے حد کردی ، مقدس مقامات کو بھی نہیں چھوڑا ہے ۔ انہوں نے نوجوانوں پر زور دیا کہ وہ انٹرنیٹ کا صحیح استعمال کریں اور اچھی صحبتوں کو اختیار کریں ۔ انٹرنیٹ استعمال کنندہ کے لیے خطرناک بھی ثابت ہوسکتا ہے ۔ اس موقع پر عالمی امن و سلامتی خاص کر سعودی عرب ، عراق ، شام ، یمن ، برما ، چین ، فلسطین اور مسجد اقصیٰ کے لیے خصوصی دعا کی گئی ۔ قبل نماز خطاب کے بعد ، بعد نماز خطبہ دیا اور دعا کی ۔۔جمعیت اہلحدیث کی جانب سے شہر کے مختلف مقامات پر نماز کا اہتمام کیا گیا تھا۔ علاوہ ازیں نوتشکیل شدہ رجسٹرڈ جمعیت اہلحدیث کی جانب سے شہر کے تین علیحدہ مقامات پر نماز عیدالفطر کا اہتمام کیا گیا۔ دونوں شہروں کے مختلف مقامات پر نماز عیدالفطر کے دوران بارش اور ملک میں امن و امان کے لئے خصوصی دعائیں کی گئیں۔

TOPPOPULARRECENT