Friday , March 24 2017
Home / Top Stories / روانڈہ اور ممبئی کے درمیان اپریل سے راست پروازیں

روانڈہ اور ممبئی کے درمیان اپریل سے راست پروازیں

نائب صدرجمہوریہ حامد انصاری کا روانڈہ یونیورسٹی میں خطاب، تین یادداشت مفاہمت پر دستخط

کیگالی ۔ 21 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان اور روانڈہ کے درمیان تین معاہدوں پر دستخط ہوئے ہیں جہاں دونوں ممالک نے سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبوں میں باہمی تعاون میں اضافہ کی ضرورت پر زور دیا جس میں ایک انٹرپرینر شپ ڈیولپمنٹ سنٹر کا قیام اور ممبئی کیلئے راست پرواز بھی شامل ہے۔ دونوں ممالک نے دو یادداشت مفاہمت پر دستخط کئے۔ اس وقت نائب صدرجمہوریہ حامد انصاری اور روانڈہ کے وزیراعظم اناستا سے موروکیزی بھی انڈیا۔ روانڈہ بزنس فورم میں موجود تھے۔ یاد رہیکہ حامد انصاری اپنے پانچ روزہ دورہ روانڈہ اور یوگانڈہ کے دوران کل ہی یہاں پہنچے تھے۔ پہلے معاہدہ کے مطابق روانڈہ میں ایک انٹر پرینر شپ ڈیولپمنٹ قائم کیا جائے گا تاکہ دونوں ممالک کے درمیان سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبوں کو مزید مستحکم کیا جاسکے اور ساتھ ہی ساتھ ہندوستان کی اس شعبہ میں مہارت سے بھی استفادہ کیا جاسکے۔ دوسرا اہم معاہدہ روانڈہ اور ممبئی کے درمیان راست پرواز ہے جو سرکاری رواینڈیئر کے ذریعہ شروع کی جائے گی۔ MEA کے ایک سینئر عہدیدار نے بتایا کہ مجوزہ سنٹر کو ہندوستان کی جانب سے فنڈس فراہم کئے جائیں گے۔ ویزہ نظام کو بھی آسان تر بنایا جائے گا اور خصوصی طور پر ایسے ہندوستانیوں کیلئے جن کے پاس ڈپلومیٹک پاسپورٹس ہیں، روانڈہ کے سفر کو آسان تر بنایا جائے گا

جبکہ جاریہ سال اپریل کے اوائل سے کیگالی تا ممبئی راست پروازوں کے آغاز کا بھی امکان ہے۔ انڈین ہائی کمیشن آف یوگانڈہ کی جانب سے ترتیب دی گئی ایک تقریب میں ہائی کمشنر نے بتایا کہ اب راست پروازیں اب حقیقت بن جائیں گی۔ عرصہ دراز سے اس کی ضرورت محسوس کی جارہی تھی حالانکہ متعلقہ عہدیداروں نے اس کیلئے کسی مخصوص تاریخ کا اعلان نہیں کیا۔ تاہم روانڈہ ایئر کی ویب سائیٹ کے مطابق کیگالی سے ممبئی کی راست پروازوں کا آغاز 3 اپریل سے ہوگا۔ ان یادداشت مفاہمت پر دستخط کے بعد دونوں ممالک کے درمیان تعلقات مزید مستحکم ہوجائیں گے۔ قبل ازیں حامد انصاری نے اپنے ایک خطاب کے دوران کہا تھا کہ ہندوستان کی توانائی اور غذائی ضروریات کی تکمیل کیلئے افریقی ملک ہندوستان کا بہترین شراکت دار بن کر سامنے آئے گا اور اس طرح یہ دونوں ممالک فطری طور پر ایک دوسرے کے شراکت دار بن جائیں گے جس سے باہمی طور پر معیشت کو استحکام حاصل ہوگا۔ حامد انصاری نے کہا کہ یوگانڈہ کیلئے ہندوستان ایک انتہائی منفعت بخش مارکٹ ہے اور دوسری طرف یوگانڈہ ہندوستان کیلئے توانائی سیکوریٹی اور فوڈ سیکوریٹی کے شعبوں میں انتہائی کارآمد ثابت ہوگا جو ہمارے لئے ’’ون ون‘‘ (دونوں جانب نصف نصف کامیابی) صورتحال ہے۔ مسٹر انصاری یونیورسٹی آف روانڈہ میں منعقدہ ایک جلسہ سے خطاب کررہے تھے جہاں انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں 328 ملین نوجوانوں کی موجودگی ہندوستان کی کل آبادی کے 28 فیصد تناسب کی نشاندہی کرتی ہے۔ ہمارے درمیان تعلقات ایک ایسے وقت مستحکم ہورہے ہیں جب ساری دنیا نے ہندوستان کی ترقی کا اعتراف کیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT