Monday , September 25 2017
Home / شہر کی خبریں / روبیلہ اور خسرہ ویاکسن کے لیے خانگی اسکولس کا عدم تعاون

روبیلہ اور خسرہ ویاکسن کے لیے خانگی اسکولس کا عدم تعاون

متعدد شکایتوں کے بعد محتاط رویہ ، بچوں کی صحت پر حکومت کی مہم پر عوام کے شکوک
حیدرآباد ۔ 23 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : بچوں کی صحت کو برباد کرنے والی بیماریوں کے روک تھام کے لیے روبیلہ خسرہ ٹیکہ اندازی مہم کا مرکزی و ریاستی حکومتوں کی جانب سے بڑے پیمانے پر 17 اگست سے آغاز کیا گیا ہے اور یہ ٹیکہ 9 ماہ کے بچوں سے لے کر 15 برس عمر والے بچوں کو دیا جانا ضروری ہے ۔ ریاست میں 90,00,117 بچوں کی نشاندہی کی گئی ہے اور ان تمام بچوں کو ٹیکہ اندازی کرنے کے لیے محکمہ صحت و خاندانی بہبود نے ایک مشن کے طور پر خدمات کا آغاز کیا ہے اور ریاست کے تمام اضلاع میں ٹیکہ اندازی پروگرام شروع ہوچکا ہے ۔ مگر تعلیم یافتہ افراد کی کثرت کے مقامات پر ہی یہ عمل بہت کمزور طریقہ سے چل رہا ہے ۔ خصوصا گریٹر حیدرآباد میں ٹیکہ اندازی مہم ماند پڑ چکی ہے ۔ حیدرآباد ، میڑچل اور رنگاریڈی اضلاع ٹیکہ اندازی مہم کی فہرست میں تمام اضلاع سے پیچھے ہیں ۔ محکمہ صحت کے عہدیداران کے مطابق خانگی اسکولس انتظامیہ کی ٹیکہ اندازی کے لیے عدم اجازت کی وجہ سے ہی تاخیر ہورہی ہے اور ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ نامور تعلیمی ادارے بھی اس معاملہ میں آگے نہیں آرہے ہیں ۔ فی الحال ریاست میں اب تک 33,85,260 بچوں کی ٹیکہ اندازی کی گئی ہے اور ٹیکہ اندازی مہم 25 ستمبر تک جاری رہے گی ۔ ریاست کے تمام سرکاری اسکولس ، آنگن واڑی مراکز ، خانگی اسکولس اور سرکاری دواخانوں میں ٹیکہ اندازی کی جائے گی ۔ اتنا ہی نہیں اسکولس سے باہر رہنے والے بچوں کو بھی ٹیکہ اندازی کے لیے محکمہ صحت نے اقدامات کئے ہیں ۔ دریں اثناء خانگی تعلیمی اداروں کی جانب سے بچوں کو ٹیکہ اندازی کے لیے عدم اجازت مستقبل میں بچوں کی صحت سے کھلواڑ کا ذریعہ بن رہی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT