Wednesday , August 16 2017
Home / شہر کی خبریں / روزنامہ سیاست کی 12 فیصد تحفظات تحریک کو کانگریس کی تائید

روزنامہ سیاست کی 12 فیصد تحفظات تحریک کو کانگریس کی تائید

کانگریس لیجسلیچر پارٹی کا اجلاس، اسمبلی و کونسل اجلاس میں مسئلہ اٹھانے کا فیصلہ
حیدرآباد /16 ستمبر (سیاست نیوز) کانگریس لیجسلیچر پارٹی کے اجلاس میں روزنامہ سیاست کی شروع کردہ 12 فیصد مسلم تحفظات تحریک کا تذکرہ ہوا، جس کی محمد فاروق حسین نے تائید کرنے کانگریس پارٹی سے اپیل کی۔ مجوزہ اسمبلی و کونسل اجلاس کی حکمت عملی تیار کرنے کے لئے اسمبلی کے کانفرنس ہال میں کانگریس لیجسلیچر پارٹی کا اجلاس قائد اپوزیشن کے جانا ریڈی کی صدارت میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں قائد اپوزیشن کونسل محمد علی شبیر، صدر تلنگانہ پردیش کانگریس اتم کمار ریڈی، ورکنگ پریسیڈنٹ ملو بٹی وکرامارک کے علاوہ کانگریس کے ارکان اسمبلی و ارکان قانون ساز کونسل بھی موجود تھے۔ دریں اثناء محمد فاروق حسین نے کہا کہ روزنامہ سیاست نے 12 فیصد مسلم تحفظات کی تحریک کا آغاز کرتے ہوئے حکومت پر دباؤ ڈالنے کی جدوجہد کا آغاز کیا ہے، جس پر دیہی اور شہری علاقوں میں مثبت ردعمل ظاہر کیا جا رہا ہے۔

 

انھوں نے کہا کہ سیاسی وابستگی سے بالاتر ہوکر مسلم قائدین اور رضاکارانہ تنظیمیں تحصیلدار، آر ڈی او، کلکٹرس اور عوامی منتخب نمائندوں کو 12 فیصد مسلم تحفظات کے لئے بڑے پیمانے پر یادداشیں پیش کر رہے ہیں، جس سے سرکاری مشنری اور سیاسی حلقوں میں ہلچل پیدا ہو گئی ہے اور ہر محفل و تقاریب میں مسلم تحفظات پر مباحث ہو رہے ہیں، لہذا وہ مسرز کے جانا ریڈی اور محمد علی شبیر سے اپیل کرتے ہیں کہ اسمبلی اور کونسل میں 12 فیصد مسلم تحفظات کو موضوع بحث بنایا جائے۔ انھوں نے صدر پردیش کانگریس اتم کمار ریڈی سے اپیل کی کہ وہ تلنگانہ کے تمام اضلاع کے کانگریس صدور اور قائدین کو مسلم تحفظات کی تائید کے احکامات جاری کریں۔ فاروق حسین کی اس تجویز کی کانگریس ارکان اسمبلی ڈاکٹر جے گیتا ریڈی، ٹی جیون ریڈی، کومٹ ریڈی وینکٹ ریڈی اور ارکان قانون ساز کونسل ایم ایس پربھاکر وغیرہ نے تائید کی۔ اجلاس میں ریاست کی تازہ سیاسی صورت حال، آبپاشی پراجکٹس کے ڈیزائن کی تبدیلی، خشک سالی، فصلوں کے نقصانات، کسانوں کی خودکشی کے علاوہ ٹی آر ایس کے انتخابی منشور میں کئے گئے وعدوں کی عدم عمل آوری پر ایوانوں میں حکومت کو جھنجھوڑنے کا فیصلہ کیا گیا۔ محمد فاروق حسین نے مکہ مکرمہ میں عازمین حج کی شہادت کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے ان کے ارکان خاندان کو ایکس گریشیا، سرکاری ملازمت اور مکان کی تعمیر کے لئے اراضی فراہم کرنے کے لئے حکومت پر دباؤ ڈالنے کا مشورہ دیا۔

TOPPOPULARRECENT