Wednesday , August 23 2017
Home / دنیا / روسی سفیر کی میت دیکھ کر والدہ اور بیوہ غم سے نڈھال

روسی سفیر کی میت دیکھ کر والدہ اور بیوہ غم سے نڈھال

ماسکو۔ 21 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) ترکی میں قتل کر دیے جانے والے روسی سفیر آندرے کارلوف کی میت منگل کے روز ماسکو پہنچی تو ان کی والدہ اور بیوہ کی حالت غیر ہو گئی۔ کارلوف کو پیر کے روز انقرہ میں گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔وینوکوو کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر روسی فوجیوں کے کاندھوں پر کارلوف کی میت کا تابوت اتارا گیا تو وہ روسی پرچم سے ڈھانپا ہوا تھا۔ روسی سفیر کی والدہ ماریا جذبات پر قابو نہ رکھ سکیں اور شدت غم سے نڈھال ہو گئیں۔ اس موقع پر روسی وزیر خارجہ سرگئی لاؤروف اور ان کے ترک ہم منصب مولود چاوش اوگلو نے مقتول سفیر کی والدہ کو سنبھالا۔روسی سفیر کی اہلیہ مارینا انقرہ میں اپنے شوہر کے قتل کے بعد نروس بریک ڈاؤن کا شکار ہو گئی تھیں جس پر انہیں فوری طور پر ہسپتال منتقل کر دیا گیا تھا۔ بعد ازاں وہ کارلوف کی میت کے ساتھ ماسکو پہنچیں تو ان کے ساتھ سفارت خانے کی جانب سے ایک ڈاکٹر اور ایک ماہر نفسیات بھی تھا۔انقرہ کے ہوائی اڈے پر کارلوف کی بیوہ ہاتھ میں گلنار کے سرخ پھول تھامے اپنے شوہر کی میت کے ساتھ کھڑی نظر آئیں۔ترکی کے انٹیلی جنس ادارے کے ساتھ خصوصی گفتگو میں مارینا نے اپنے شوہر کے قتل کے وقت خوف ناک لمحوں کو بیان کرتے ہوئے بتایا کہ “میں دیگر لوگوں کیساتھ زمین پر لیٹ گئی تھی ، نمائش میں بہت سے لوگ تھے۔ ہم سب ہی اس واقعے پر دہشت کا شکار تھے۔ ہسپتال کے راستے میں میرے حواس کچھ بحال ہوئے اور مجھے یقین تھا کہ میرے شوہر کی موت واقع ہو چکی ہے.. انہیں گیارہ گولیاں لگی تھیں۔”

TOPPOPULARRECENT