Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / روہنگیا مسلمانوں کی واپسی کیلئے بنگلہ دیش اور مائنمار سے بات چیت

روہنگیا مسلمانوں کی واپسی کیلئے بنگلہ دیش اور مائنمار سے بات چیت

غیرقانونی طور پر موجود 40,000 پناہ گزینوں کو واپس بھیجنے کے امکانات کا جائزہ

نئی دہلی ۔ 11 اگست (سیاست ڈاٹ کام) حکومت کے ترجمان نے کہا ہے کہ روہنگیا پناہ گزینوں کی واپسی کے لیے میانمار اور بنگہ دیش کی حکومتوں سے مذاکرات جاری ہیں۔ نئی دھلی میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے ترجمان نے آج کہا کہ میانمار اور بنگلہ دیش کی حکومتوں کے ساتھ مذاکرات کا مقصد 40,000 روہنگیا مسلمانوں کو ہندوستان سے واپس بھیجنے کا راستہ ہموار کرنا ہے۔حکومت حکومت کا کہنا ہیکہ روہنگیا مسلمان غیر قانونی طور پر ہندوستان میں مقیم ہیں اور انہیں جلد از جلد یہاں سے چلے جانا چاہیے۔قابل ذکر ہے کہ میانمار میں انتہا پسند بدھسٹوں کے حملوں سے بچنے کے لیے کئی ہزار روہنگیا مسلمان ہندوستان اور بنگلہ دیش میں پناہ لینے پر مجبور ہوگئے ہیں۔میانمار کی حکومت بھی ملک میں آباد تقریبا دس لاکھ روہنگیا مسلمانوں کو غیر قانونی تارکین وطن قرار دیتی ہے اور اس نے ان کی شہریت بھی منسوخ کردی ہے۔روہنگیا مسلمانوں کی اکثریت میانمار کے صوبے راخین میں آباد ہے تاہم انہیں 2012ء سے انتہا پسند بدھسٹوں کے منظم حملوں کا سامنا ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT