Tuesday , September 26 2017
Home / ہندوستان / روہیت کے بھائی کو ملازمت سے دلچسپی نہیں: عآپ

روہیت کے بھائی کو ملازمت سے دلچسپی نہیں: عآپ

نئی دہلی۔/17مئی، ( سیاست ڈاٹ کام ) عام آدمی پارٹی حکومت نے آج دہلی ہائیکورٹ کو مطلع کیا ہے کہ حیدرآباد یونیورسٹی کے دلت اسکالر روہیت ویملا جس نے خودکشی کرلی تھی کے بھائی نے سرکاری ملازمت کی پیشکش میں خاطر خواہ دلچسپی نہیں دکھائی ہے۔ چیف جسٹس جی روہنی اور جسٹس جینت ناتھ پر مشتمل بنچ کے روبرو دہلی حکومت نے یہ معروضہ پیش کیا اور بتایا کہ روہیت کے بھائی نے ایک مکتوب روانہ کرتے ہوئے یہ اطلاع دی ہے کہ ہمدردی کی بنیاد پر وہ ملازمت کا خواہشمند نہیں ہے جس کے پیش نظر عدالت میں داخل عرضی قابل سماعت نہیں رہ سکتی۔ حکومت دہلی کے ایڈیشنل اسٹانڈگ کونسل گوتم نارائن نے بنچ کو یہ اطلاع دی ہے تاہم عدالت نے حکومت دہلی کو ہدایت دی ہے کہ اندرون 2ہفتے ایک حلف نامہ داخل کرتے ہوئے اپنے دلائل کی تصدیق کرے اور اس معاملہ پر سماعت کیلئے 13جولائی تاریخ مقرر کی ہے۔ واضح رہے کہ دہلی کے ایک ایڈوکیٹ اوالا کوشک نے ایک رٹ پٹیشن داخل کرتے ہوئے 24 فبروری کو کئے گئے عام آدمی پارٹی حکومت کے فیصلہ کو چیلنج کیا ہے۔جبکہ حکومت نے روہیت کے بھائی ویمولا راجہ چیتنیا کمار کو گروپ سی سرکاری ملازمت کی پیشکش کی ہے ۔ درخواست گذار نے اس اقدام کو غیر قانونی اور سیاسی محرکات پر مبنی قرار دیاہے۔ قبل ازیں روہیت کے بھائی نے یہ نمائندگی کی تھی کہ خاندان کی معاشی کفالت کیلئے سرکاری ملازمت کے ذریعہ تعاون کیا جائے۔ جس پر دہلی کا بینہ نے قبول کرتے ہوئے یہ فیصلہ کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT