Tuesday , October 17 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ریاستی سطح پراردو میڈیم طالبہ کو پہلا مقام

ریاستی سطح پراردو میڈیم طالبہ کو پہلا مقام

نرسا پور کی طالبہ کا متخیر کن تعلیمی مظاہرہ، محبان اردو و دیگر کی ستائش
نرسا پور۔/12جولائی، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاستی سطح کے تحریری مقابلوںمیں ضلع میدک کو پہلا مقام حاصل ہوگیا۔ اردو میڈیم کی ایک طالبہ نے اپنی صلاحیتوں سے ضلع میدک کو ریاست بھر میں سرفہرست دلایا ہے۔ عالمی یوم آبادی کے موضوع پر منعقدہ تحریری مقابلوں میں شبانہ بیگم نے زبردست تعلیمی مظاہرہ کرتے ہوئے سارے طلبہ کو پیچھے چھوڑ دیا اور اردو زبان کے جھنڈے کو آگے کردیا۔ ضلع پریشد گرلز ہائی اسکول نرسا پور کی دسویں جماعت کی طالبہ شبانہ بیگم نے یہ ثابت کردیا کہ اردو میڈیم ذریعہ تعلیم طلبہ میں صلاحیتوں کی کوئی کمی نہیں رہتی بلکہ اردو میڈیم کو دی جانے والی سہولیات میں کافی فقدان رہتا ہے۔ اسٹیٹ کونسل آف ایجوکیشنل ریسرچ اینڈ ٹریننگ ریاست تلنگانہ کی جانب سے عالمی یوم آبادی کے موقع پر ریاستی سطح کے تحریری مقابلوں کا انعقاد عمل میں لایا گیا تھا جس میں اردو میڈیم اسکول کی طالبہ شبانہ بیگم نے بھی شرکت کی اور اپنی صلاحیتوں کو منواتے ہوئے سب کی داد و تحسین حاصل کی۔ نمائندہ سیاست نرسا پور محمد انور علی نے شبانہ بیگم سے بات کرنے پر اس طالبہ نے اپنی کامیابی پر اللہ کا شکر ادا کیا اور اپنی کامیابی کے پیچھے والدین کی محنت و دعاؤں کے علاوہ اساتذہ کی خصوصی دلچسپی کو اہم قرار دیا۔ اس طالبہ نے مستقبل میں ایسے مقابلوں میں شرکت کے ساتھ اردو کے نام کو مزید روشن کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔ شبانہ بیگم نرسا پور سے تقریباً 15کیلو میٹر دور موضع وینکلٹ راؤ پیٹ علاقہ سے تعلق رکھتی ہیں اور اس لڑکی کے والد محمد اشفاق پیشہ سے مسجد کے امام ہیں۔ لڑکی طویل مسافت طئے کرتے ہوئے نرسا پور آتی ہے اور تعلیم حاصل کرتی ہے شبانہ بیگم کی اس کامیابی پر نرسا پور میں مسرت پائی جاتی ہے۔ انجمن محبان اردو، محبان مفتاح العلوم، آواز کمیٹی ، مدینہ یوتھ اسوسی ایشن، جمعیت الحفاظ اور مسجد صفاء نرسا پور کی کمیٹی نے اپنے بیان میں مبارکباد پیش کی ہے۔ محبان مفتاح العلوم نے شبانہ بیگم کی صلاحیتوں کی زبردست ستائش کی اور کہا کہ اس طالبہ نے یہ ثابت کردیا کہ سہولیات کے فقدان کے باوجود بھی اردو میڈیم کے طلبہ کسی سے کم نہیں وہ ہر مقابلہ میں شرکت کا جذبہ رکھتے ہیں بلکہ کامیابی بھی حاصل کرتے ہیں۔ تاہم افسوس کہ ارباب مجاز اردو سے ناانصافیوں کا سلسلہ ختم ہی نہیں کرتے۔ انہوں نے شبانہ بیگم کی کامیابی کو ضلع کیلئے اعزاز قرار دیا۔

TOPPOPULARRECENT