Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / ریاست آندھرا پردیش کا 1,56,999 کروڑ موازنہ بجٹ

ریاست آندھرا پردیش کا 1,56,999 کروڑ موازنہ بجٹ

ریاستی اسمبلی میں وزیر فینانس وائی رام کرشنوڈو نے بجٹ پیش کیا
حیدرآباد ۔ 15 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : آندھرا پردیش قانون ساز اسمبلی واقع امراوتی میں وزیر فینانس و امور مقننہ مسٹر وائی راما کرشنوڈو نے سال برائے (2017-2018) کے لیے 1,56,999 کروڑ روپیوں پر مشتمل موازنہ ( بجٹ ) پیش کیا اور بتایا کہ گذشتہ سال 2016-2017 کے مقابلہ میں (15.70) فیصد اضافہ ہے ۔ وزیر فینانس نے اپنی بجٹ تقریر میں کہا کہ ریاستی عوام تک حکومت پہونچنے جیسے مقصد کے ساتھ حیدرآباد سے قبل از وقت ہی مکمل نظم و نسق کو امراوتی لے آیا گیا ۔ مسٹر وائی راما کرشنوڈو نے آندھرا پردیش کی نئی راجدھانی امراوتی میں پہلی مرتبہ اسمبلی میں پہلا ریاستی بجٹ پیش کیا اور کہا کہ ریاستی حکومت عالمی سطح کے شہر کی طرح امراوتی کو ترقی دے کر ثابت کیا جائے گا ۔ جب کہ کئی ایک معاملات میں آندھرا پردیش ملک بھر میں ایک مثالی ریاست کہلائے گی ۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست کی تقسیم سے کئی شعبوں کو اہمیت دیتے ہوئے اور ہر ایک کیلئے روزگار فراہم کرنے و صنعتی اعتبار سے ترقی دیتے ہوئے عوام کو انتہائی شفاف حکمرانی فراہم کرنے کو حکومت نے اپنا مقصد بنالیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تقسیم کے بعد کئی سوالات جو اٹھے تھے ان تمام کو برداشت کرتے ہوئے ایک بہتر حکمرانی کو یقینی بنایا گیا ۔ بلکہ ڈھائی سال کی مدت میں کافی ترقی حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ ریاستی سکریٹریٹ اور آندھرا پردیش قانون ساز اسمبلی کیلئے نئی عمارتیں تعمیر کروائی جاسکیں ۔ مسٹر وائی راما کرشنوڈو نے کہا کہ امراوتی کو عالمی سطح کے معیار کا شہر کے طور پر تعمیر کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جارہی ہے ۔ وزیر فینانس نے اپنی بجٹ تقریر میں اقلیتوں کی ترقی کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ریاست آندھرا پردیش میں مساجد کے تمام پیش اماموں اور موذنین کو تنخواہوں کی فراہمی کے لیے 24 کروڑ روپئے ، آندھرا پردیش وقف سروے کمشنر کے لیے 50 کروڑ روپئے ، اقلیتی طلباء کو بیرونی ممالک میں اعلیٰ تعلیم کے حصول کی سہولت فراہم کرنے کے لیے 5 کروڑ روپئے اور اقلیتی طبقہ کے طلباء کو وظائف کی فراہمی کے لیے 240 کروڑ روپئے بجٹ میں مختص کئے گئے ۔۔

TOPPOPULARRECENT