Monday , September 25 2017
Home / شہر کی خبریں / ریاست تلنگانہ میں شراب پر مکمل پابندی عائد کرنے کا مطالبہ

ریاست تلنگانہ میں شراب پر مکمل پابندی عائد کرنے کا مطالبہ

حکومت کی نئی آبکاری پالیسی کے خلاف نیشنل فیڈریشن آف انڈین ویمنس کا احتجاج
حیدرآباد۔13اگست(سیاست نیوز) کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کی محاذی تنظیم نیشنل فیڈریشن آف انڈین ویمنس گریٹر حیدرآباد ساوتھ زون یونٹ کی جانب سے حکومت تلنگانہ کی نئی آبکاری پالیسی کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ پیش کیا گیا۔ حمایت نگر وائی سرکل پر این ایف آئی ڈبیلو کے سینکڑوں خواتین نے احتجاجی مظاہرے کے دوران حکومت کا علامتی پتلہ بھی نذر آتش کیا۔فیڈریشن کی ریاستی صدر شریمتی چھایہ دیوی نے اس موقع پر حکومت کی نئی آبکاری پالیسی کو ریاست کی عوام کے لئے مزید جان لیوا قراردیا۔ انہوں نے کہاکہ سستی شراب ( گڑمبہ) پر امتناع عائد کرتے ہوئے ریاست میں مہنگی شراب اور سیندھی کو عام کرنے کے لئے جاری کئی گئی حکومت تلنگانہ کی نئی آبکاری پالیسی پہلے سے زیادہ خطرناک ہے۔ انہوں نے کہاکہ ریاست تلنگانہ میں مزدورپیشہ افراد کی اکثریت پائی جاتی ہے جو پہلے سے ہی سستی اور غیر قانونی طریقے سے فروخت کی جانے والی شراب پی کر مررہے ہیں۔ تلنگانہ ریاست میں کلو( سیندھی) عام ہونے کے بعد آئے دن ناگہانی واقعات پیش آرہے ہیں جن میں مرنے والوں کی تعداد کی اکثریت مزدور پیشہ لوگوں کی ہے۔چھایہ دیوی نے کہاکہ اب نئی آبکاری پالیسی کے سبب شراب کے عادی لوگ بالخصوص مزدورپیشہ طبقہ اپنے اہل وعیال کو بھوکا مار کر شراب پینے کاشوق پورا کریگا۔ انہوں نے ریاستی حکومت سے ریاست میں مکمل طور سے شراب پر امتناع عائد کرنے کا مطالبہ کیا۔ چھایا دیوی نے گڑمبہ‘ سیندھی اور مہنگی شراب پر مکمل امتناع عائد کرتے ہوئے ریاست کی عوام کو ناگہانی اموات سے بچانے کاکام کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہاکہ شراب پر مکمل امتناع سے ریاست میں حادثے اور جرائم دونوں میںکمی آئے گی۔ شریمتی پی پدما‘ محترمہ حمیدہ اور فیڈریشن کے دیگر قائدین کے علاوہ سینکڑوں کارکن بھی اس موقع پر موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT