Saturday , May 27 2017
Home / شہر کی خبریں / ریاست کو 1000 کروڑ روپئے کا نقصان

ریاست کو 1000 کروڑ روپئے کا نقصان

کرنسی بحران سے نمٹنے حکومت ‘مرکز سے رجوع : ایٹالہ راجندر
حیدرآباد۔/26نومبر،( سیاست نیوز) وزیر فینانس ای راجندر نے کہا کہ مرکز کی جانب سے بڑے کرنسی نوٹ کی تنسیخ کے فیصلہ کے 17 دنوں میں ریاست کے خزانہ کو بھاری نقصان ہوا ہے۔ ایک اندازہ کے مطابق 1000 کروڑ سے زائد کا نقصان ہوا اور حکومت اس صورتحال سے نمٹنے کیلئے مرکزی حکومت سے رجوع ہوچکی ہے۔ وزیر فینانس نے کہا کہ کرنسی نوٹ کی تنسیخ کے فیصلہ سے ریاست کو جو نقصان ہوا ہے اس کی پابجائی مرکزی حکومت کی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ کالا دھن پر روک لگانے کیلئے مرکزی حکومت کی جانب سے کئے گئے فیصلہ کی ریاستی حکومت تائید کرتی ہے تاہم فیصلہ پر عمل آوری کے سلسلہ میں جو خامیاں رہ گئی ہیں انہیں دور کرنے کیلئے وزیر اعظم نریندر مودی سے نمائندگی کی گئی۔ راجندر نے کہا کہ تلنگانہ ریاست جو ترقی کے راستہ پر تیزی سے گامزن تھی اسے اس فیصلہ سے بھاری نقصان ہوا ہے۔ مرکزی حکومت نے تنسیخ شدہ نوٹوں کے مماثل متبادل کرنسی فراہم نہیں کی جس کے باعث ریاستی خزانہ کو نقصان ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ حکومت نے مرکز سے خواہش کی ہے کہ 5000 کروڑ مالیت کے چھوٹے کرنسی نوٹ فوری فراہم کئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر چھوٹی کرنسی نوٹ ریاست کو منتقل کی جاتی ہے تو اس سے موجودہ صورتحال میں بہتری پیدا ہوگی۔ وزیر فینانس کے مطابق مرکزی حکومت کے فیصلہ سے عوام کو کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا۔ اس کے علاوہ کسان اور چھوٹے تاجر بھی مسائل کا شکار ہوئے ہیں۔ مرکزی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس صورتحال سے عوام کو باہر نکالنے اقدامات کرے۔ انہوں نے کہا کہ کالا دھن کے سبب ملک کی معیشت کو بھاری نقصان ہورہا تھا اور سابقہ حکومتیں کالا دھن کو منظر عام پر لانے میں ناکام رہیں۔ وزیر اعظم نے جو فیصلہ کیا ہے ہم اس کی تائید کرتے ہیں     ( باقی سلسلہ صفحہ 5 پر )

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT