Wednesday , September 20 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ریاست کے 86 فیصد مسلمانوں کی مستقل ذرائع آمدنی نہیں

ریاست کے 86 فیصد مسلمانوں کی مستقل ذرائع آمدنی نہیں

بی سی کمیشن سے بھرپور نمائندگی کرنے رکن اسمبلی بودھن شکیل عامر کی اپیل

بودھن ۔ 18 ؍ ڈسمبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)  رکن اسمبلی بودھن جناب محمد شکیل عامر نے مسلمانوں سے خواہش کی کہ ریاست تلنگانہ میں آباد خط غربت سے نچلی سطح پر زندگی گذار نے والے مسلم خاندانوں کی تفصیلات بی سی کمیشن کو پیش کریں ۔ انہوں کہا کہ حکومت کی ہدایت پر کمیشن نے عوام الناس سے درخواست وصول کرنے کی تاریخ میں دو دنوں کا اضافہ کرتے ہوئے  19 ؍ ڈسمبر تک توسیع دے دی ۔ جناب شکیل نے کہاکہ وہ ازخود آرمور ایم ایل اے مسٹر جیون ریڈی کے ہمراہ 17 ؍ ڈسمبر کو کمیشن کے سامنے پیش ہو کر چیرمین مسٹر راملو و ارکان کمیشن کو زبانی اور تحریری طور پر تلنگانہ کے مسلمانوں کی معاشی و تعلیمی پسماندگی سے واقف کرواتے ہوئے بتایا کہ ریاست کے 86 فیصد مسلمانوں کی کوئی مستقل ذرائع آمدنی نہیںہے ۔ جناب شکیل احمد نے کہا ریاست تلنگانہ کے مسلمانوں کی حالات زندگی میں بہتری لانے مسلمانوں کو مختلف شعبہ حیات و ملازمتوں کو از کم 12 فیصد تحفظات فراہم کیا جانا ناگزیر ہے ۔ اس موقع پر موجود صد ر ٹاون ٹی آر ایس پارٹی جناب محمد عابد احمد صوفی ایڈوکیٹ نے کہا کہ ادارہ ریاست کی طرف سے  مسلمانوں کو تحفظات کی فراہمی کے لئے شروع کی گئی تحریک کا نیتجہ ہے کہ سدھیر کمیشن کی معیاد ختم ہونے سے قبل ہی کمیشن کا قیام عمل میں آیا ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست تلنگانہ کے مسلمانوں کو تحفظات کی فراہمی کے بعد ہونے والے فائدوں کے تعلق سے واقف کروانے اور نوجوان نسل میں بیداری پیدا کرنے کا سہرا بے لوث نوجوان صحافی جناب عامر علی خان کے سر جاتا ہے ۔ جناب عابد نے تحفظات کے حصول کے لئے بے باگ تحریک چلانے پر جناب عامر علی خان اور ان کے ساتھ مہیم میں شامل ہونے والے  تلنگانہ کے شہریوں کو مبارکباد پیش کی ۔ قبل ازیں جناب شکیل عامر نے شادی مبارک اور کلیانہ لکشمی اسکیم سے استفادہ کرنے والوں میں چیکس تقسیم کئے اس موقع پر چیرمین بلدیہ مسٹر ایلیا ‘ عبدالکریم ‘ سید اشفاق علی ‘ ممتاز احمد محسن مقامی قائدین اور مواضعات سے آئے ہوئے سرپنچ موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT