Sunday , September 24 2017
Home / ہندوستان / ریل حادثات پر کوئی اور نہیں سریش پربھو استعفیٰ دیں

ریل حادثات پر کوئی اور نہیں سریش پربھو استعفیٰ دیں

پانچ دنوں میں دو حادثوں پرکانگریس کا سخت ردعمل ، ریل بورڈ چیرمین کے استعفیٰ پر نکتہ چینی
نئی دہلی ۔ 23 اگسٹ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس نے آج کہاکہ پانچ دنوں میں دو ٹرینوں کے پٹری سے اُترجانے کے حادثات کے بعد وزیر ریلوے سریش پربھو کو اخلاقی ذمہ داری کا ذرا سا بھی احساس ہو تو انھیں فوری اپنا عہدہ چھوڑ دینا چاہئے ۔ ریلوے بورڈ چیرمین اے کے متل کے اپنے عہدے سے استعفیٰ کی اطلاع پر ردعمل میں کانگریس ترجمان منیش تیواری نے کہاکہ متل کو مستعفی ہونے کیلئے کہنا بدترین نوعیت کا علامتی اقدام ہے ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق متل نے آج صبح اُترپردیش کے ضلع اوریا میں کیفیت ایکسپریس پٹری سے اُترجانے کے بعد اپنا استعفیٰ وزیر ریلوے پربھو کو پیش کردیا تھا ۔ آج کے حادثہ میں ٹرین ایک ڈمپر سے ٹکراگئی جس میں ریلوے کاموں کیلئے درکار تعمیراتی اشیاء لے جائی جارہی تھی ۔ اس حادثہ میں 74 افراد زخمی ہوئے ہیں۔ گزشتہ ہفتہ کو اسی ریاست کے مظفر نگر کے کتھاولی میں کالنگا۔ اُتکل ایکسپریس بھی پٹری سے اُتر گئی تھی جو زیادہ سنگین حادثہ ہوا جس کے نتیجہ میں 22 افراد ہلاک اور 156 دیگر زخمی ہوئے ۔ متل کے استعفیٰ کے تعلق سے سرکاری طورپر تصدیق نہیں ہوئی ہے ۔ تیواری نے یہاں اخباری نمائندوں کو بتایا کہ آج کے حادثہ کے بعد وزیر ریلوے پربھو کو اخلاقی ذمہ داری کا ذرا بھی احساس ہو تو انھیں فوری مستعفی ہونا چاہئے ۔ یہ انتہائی غلط رجحان ہے کہ ریل بورڈ چیرمین یا کوئی دیگر عہدیدار کو مستعفی ہونے کیلئے کہا جائے ۔ کانگریس لیڈر نے نشاندہی کی کہ 38 ماہ کی مدت میں 28 ریل حادثات پیش آئے جس میں زائد از 300 اموات ہوئیں اور 800 دیگر زخمی ہوئے تھے۔ اصل اپوزیشن پارٹی نے اُتکل ایکسپریس حادثہ کے بعد سے ہی پربھو کی برخواستگی کا مطالبہ شروع کردیا ہے۔

طلاقِ ثلاثہ پر عدالتی فیصلہ خوش آئند: فیکی
نئی دہلی ۔ 23 اگسٹ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) سپریم کورٹ کا تین طلاق کے بارے میں فیصلہ بڑا طاقتور اقدام ہے جو اس غیردستوری اور ظالمانہ طریقہ کار پر روک لگائے گا ، فیکی لیڈیز آرگنائزیشن نے آج یہ بات کہی ۔ صدر ایف ایل او واسوی بھرت رام نے کہاکہ خواتین کی تنظیم کی حیثیت سے ہم خواتین کو بااختیار بنانے کے حق میں ہیں اور یہ فیصلہ من مانی طریقہ کار کے انسداد کی سمت اہم قدم ہے ۔ بیک وقت تین طلاق کا طریقہ مسلم خواتین کو باوقار انداز میں زندگی گذارنے کی راہ میں رکاوٹ بنا ہوا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT