Sunday , October 22 2017
Home / اضلاع کی خبریں / ریمس دوا خانہ میں مزید عصری سہولتوں کی کوشش

ریمس دوا خانہ میں مزید عصری سہولتوں کی کوشش

چیف منسٹر سے مؤثر نمائندگی کرنے ریاستی وزیر جوگو رامنا کا تیقن
عادل آباد /10 جنوری (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مستقر عادل آباد کے ریمس دوا خانہ میں 32 ہفتہ کے دوران 650 گرام کی لڑکی تولد ہونے پر لڑکی کے والدین پریشان تھے، لیکن ڈاکٹروں نے خصوصی توجہ کے ساتھ علاج و معالجہ کیا، جس پر ریاستی وزیر جوگو رامنا نے اس دوا خانہ کے ڈائرکٹر ڈاکٹر سوریا کانت سے اظہار تشکر کیا۔ موصوف مستقر کے راجیو گاندھی انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنس (ریمس) کالج میں میڈیا سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر ریاستی وزیر نے دوا خانہ کو عصری آلات سے آراستہ کرتے ہوئے وزیر صحت اور چیف منسٹر سے نمائندگی کا تیقن دیا، تاکہ عادل آباد کے اس دوا خانہ میں ہر مرض کا علاج ہوسکے۔ انھوں نے کہا کہ عادل آباد کے محلہ شانتی نگر کے متوطن راکیش اور وجیہ لکشمی کو سات سال کے بعد ساڑھے سات ماہ کے دوران 650 گرام کی ایک انتہائی کمزور بچی تولد ہوئی، جس کا اس دوا خانہ میں خاطر خواہ علاج کیا گیا۔ چار ماہ علاج کے بعد جب بچی کی صحت مستحکم ہوئی تو ریاستی وزیر نے بچی کو والدین کے سپرد کیا۔ ضلع عادل آباد میں 40 فیصد بچے ایک کیلو وزنی تولد ہو رہے ہیں، جس پر اظہار تشویش کرتے ہوئے جوگو رامنا نے حاملہ خواتین کو وٹامن بخش تغذیہ کے استعمال کا مشورہ دیا، تاکہ بچوں کی نشو و نما بہتر طریقے سے ہوسکے۔ انھوں نے ریمس دوا خانہ سے پانی کی قلت کو دور کرنے کی غرض سے دوا خانہ کے احاطہ میں ایک پاور سب اسٹیشن کا قیام عمل میں لانے سے اتفاق کیا۔ قبل ازیں موصوف نے دوا خانہ میں بچوں کے ایمرجنسی وارڈ کا معائنہ کیا، جہاں کم مدت میں پیدا ہونے والے کمزور بچوں کو علاج کے ذریعہ محفوظ رکھا گیا ہے۔ اس موقع پر مسرز سید ساجد الدین، عروج خان، مجاہد شاہ، مسعود پٹیل اور دیگر بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT