Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / ریونت ریڈی و ایم وکرامارکا عثمانیہ یونیورسٹی پہونچے

ریونت ریڈی و ایم وکرامارکا عثمانیہ یونیورسٹی پہونچے

عدالتی احکام کی خلاف ورزی پر دونوں کے خلاف مقدمہ درج
حیدرآباد 2 جون (سیاست نیوز) ہائیکورٹ کے احکامات کی خلاف ورزی کرتے ہوئے عثمانیہ یونیورسٹی طلبا کی جانب سے آج منعقدہ تلنگانہ جاترا میں شر کت کرنے پر عثمانیہ یونیورسٹی پولیس نے تلگو دیشم اور کانگریس ارکان اسمبلی کے خلاف مقدمات درج کرلئے۔ یوم تاسیس کے موقع پر احاطہ یونیورسٹی میں سیاسی سرگرمیوں پر پابندی عائد کرنے سال دوم کے لا اسٹوڈنٹس کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت کے بعد عبوری احکامات جاری کرکے ہائیکورٹ نے تلنگانہ جاترا میں سیاسی قائدین کی شرکت یا سیاسی سرگرمیوں پر پابندی عائد کرکے پولیس کو اور یونیورسٹی حکام کو کارروائی کے احکامات جاری کئے تھے، لیکن احکامات کی خلاف ورزی کرتے ہوئے تلگو دیشم رکن اسمبلی ریونت ریڈی طالب علم کے بھیس میں خفیہ طور پر عثمانیہ یونیورسٹی کیمپس میں موٹر سائیکل پر داخل ہونے میں کامیاب ہوگئے اور تلنگانہ جاترا میں ایک گھنٹہ 15 منٹ تک خطاب کیا جس میں موجودہ حکومت اور چیف منسٹر تلنگانہ پر تنقید کی ۔ ریونت ریڈی نے حکومت پر الزام عائد کیا کہ اس نے تلنگانہ کے قیام کیلئے قربانی دینے والے 1200 افراد کیلئے کچھ نہیں کیا۔ انہوں نے چیف منسٹر پر الزام عائد کیا کہ موجودہ حکومت ایک ہی خاندان کے چار افراد پر محدود ہوکر رہ گئی ہے ۔ ریونت ریڈی نے حکومت پر الزام عائد کیا کہ انہیں تلنگانہ کے غدار ہونے کا پروپگنڈہ چلایا جارہا ہے۔  انہوں نے چیف منسٹر کو یہ چیلنج کیا ہے کہ وہ ان کا خون کا معائنہ کرائیں تاکہ اپنا آبائی مقام تلنگانہ ہونا ثابت ہوجائے۔ انہوں نے بتایا کہ انکی تین نسلوں کا تعلق محبوب نگر سے ہے جبکہ حکومت کے ذمہ داران کا تعلق آندھرا سے ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہیں بیجا طور پر نوٹ برائے ووٹ اسکام میں ماخوذ کیا گیا ہے اور وہ بے قصور ثابت ہوں گے۔ عثمانیہ یونیورسٹی پولیس نے آج رات دیر گئے ریونت ریڈی کے علاوہ کانگریس رکن اسمبلی بٹی وکرامارکا و دیگر کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT