Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / ریونت ریڈی کو عوام میں پھوٹ ڈالنے کی کوششوں سے باز آنے کا مشورہ

ریونت ریڈی کو عوام میں پھوٹ ڈالنے کی کوششوں سے باز آنے کا مشورہ

حکومت پر تمام طبقات کے تحفظ کی ذمہ داری ، ٹی آر ایس ایم پی بی سمن کا سخت ردعمل
حیدرآباد ۔ 13 ۔ جنوری (سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے رکن پارلیمنٹ بی سمن نے تلگو دیشم رکن اسمبلی ریونت ریڈی پر سخت تنقید کی اور کہا کہ وہ تلنگانہ تہذیب کو فراموش کرتے ہوئے تلنگانہ قائدین کے خلاف بیان بازی کر رہے ہیں۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے سمن نے کہا کہ ریونت ریڈی کے بیانات کا مقصد علاقائی بنیاد پر گریٹر حیدرآباد کے رائے دہندوں کو تقسیم کرنا ہے ۔ تلنگانہ کی تہذیب عوام کو جوڑنے کا کام کرتی ہے ، برخلاف اس کے تلگو دیشم پارٹی گریٹر انتخابات میں سیاسی فائدہ کیلئے رائے دہندوں کو بانٹنے کی کوشش کر رہی ہے۔ انہوں نے ریونت ریڈی کو مشورہ دیا کہ وہ عوام میں پھوٹ ڈالنے کی کوششوں سے باز آجائیں۔ انہوں نے کہا کہ تلگو دیشم قائدین حیدرآباد کے پرامن ماحول کو بگاڑنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی ذمہ داری تمام طبقات کا تحفظ کرنا ہے اور ٹی آر ایس حکومت علاقائی تعصب سے بالاتر ہوکر تمام کی بھلائی کے اقدامات کر رہی ہے۔ سمن نے یاد دلایا کہ تلنگانہ تحریک کے دوران اور تلنگانہ تشکیل کے بعد گزشتہ 18 ماہ میں سیما آندھرائی عوام کے خلاف نفرت یا تشدد کا ایک بھی واقعہ پیش نہیں آیا ۔ اس سے صاف ظاہر ہے کہ ٹی آر ایس حکومت تمام طبقات اور علاقوں کا احترام کرتی ہے۔ سمن نے الزام عائد کیا کہ تلنگانہ کی ترقی کو برداشت نہ کرتے ہوئے تلگو دیشم قائدین سازشیں کر رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ورنگل کے ضمنی انتخابات میں عوام نے تلگو دیشم کو سبق سکھایا تھا

 

اور اب گریٹر انتخابات میں بھی تلگو دیشم کا وہی حشر ہوگا۔ انہوں نے گریٹر انتخابات میں ٹی آر ایس کی کامیابی کو یقینی قرار دیا اور کہا کہ حیدرآباد سے تلگو دیشم پارٹی کا مکمل صفایا ہوجائے گا۔ انہوں نے کے ٹی آر کے اس چیلنج کو قبول کرنے کا مشورہ دیا جس میں انہوں نے گریٹر انتخابات میں شکست کی صورت میں وزارت سے مستعفی ہونے کی بات کہی تھی۔ سمن نے بتایا کہ کے ٹی راما راؤ کی مساعی سے حیدرآباد میں انفارمیشن ٹکنالوجی کے شعبہ میں کافی ترقی ہوئی ہے اور کئی بین الاقوامی اداروں نے سرمایہ کاری سے اتفاق کیا ہے۔ انفارمیشن ٹکنالوجی کے کئی ادارے حیدرآباد میں اپنے کیمپس قائم کرنے سے اتفاق کرچکے ہیں۔ رکن پارلیمنٹ نے کہا کہ انفارمیشن ٹکنالوجی کے شعبہ کی ترقی سے نہ صرف حیدرآباد کی ترقی ہوگی بلکہ نوجوانوں کو روزگار کے مواقع حاصل ہوں گے ۔ سمن نے کانگریس کے جنرل سکریٹری ڈگ وجئے سنگھ کی جانب سے چیف منسٹر پر کی گئی تنقیدوں کی مذمت کی اور کہا کہ کانگریس پارٹی بوکھلاہٹ کا شکار ہے اور وہ الزام تراشی کے ذریعہ گریٹر انتخابات میں فائدہ اٹھانا چاہتی ہے۔ اسی دوران ٹی آر ایس کے رکن قانون ساز کونسل بھانو پرساد نے تلگو دیشم قائد نارا لوکیش کے مخالف تلنگانہ حکومت بیان کو بچکانی قرار دیا اور کہا کہ لوکیش کو کوئی سیاسی تجربہ نہیں ہے اور وہ وہی بات کہہ رہے ہیں جو انہیں قائدین کی جانب سے لکھ کر دی جارہی ہے۔ حیدرآباد کی ترقی کے بارے میں تلگو دیشم اور بی جے پی کے دعوؤں کو مسترد کرتے ہوئے بھانو پرساد نے کہا کہ آندھرائی حکمرانوں نے ہمیشہ تلنگانہ کو نظرانداز کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT