Monday , August 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / ریو 2016ء بلاشبہ میرے لئے آخری اولمپکس ہوں گے : بولٹ

ریو 2016ء بلاشبہ میرے لئے آخری اولمپکس ہوں گے : بولٹ

کنگسٹن ، 22 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) یوسین بولٹ نے تصدیق کردی ہے کہ اس سال کے اولمپکس اُن کیلئے آخری چار سالہ مقابلے ہوں گے، جس کے ساتھ انھوں نے ٹوکیو میں 2020ء گیمز تک اپنے کریئر کو وسعت دینے کا امکان ختم کردیا ہے۔ جمائیکا کے اسپرنٹ کنگ نے اپنا اولمپک کریئر طویل تر کرنے کا جنوری میں اشارہ دیا تھا جب انھوں نے انکشاف کیا تھا کہ اُن کے کوچ گلن ملز کی رائے ہے کہ اُن کی فٹنس انھیں جاپان تک بہ آسانی پہنچا دے گی۔ تاہم بولٹ نے نیوز ایجنسی ’اے ایف پی‘ کے ذیلی ادارہ ’ایس آئی ڈی‘ کو انٹرویو میں بتایا کہ اُن کے اولمپک کریئر پر اس سال ریو ڈی جنیرو میں منعقد شدنی گیمز میں پردہ گرجائے گا، جہاں وہ مزید تین گولڈ میڈلس جیتنے کا عزم رکھتے ہیں۔ ’’یہ بلاشبہ میرے لئے آخری اولمپکس رہیں گے۔ میرے لئے مزید چار سال تک مسابقت کرتے رہنا بہت مشکل امر رہے گا، بالخصوص ایسی صورت میں جب میں وہ سب پالوں جس کی میں نے ریو گیمز سے توقعات باندھ رکھی ہیں۔ مزید چار سال تک اسی طرح کی مسابقت کیلئے جوش و جذبہ برقرار رکھنا بہت مشکل رہے گا، اس لئے یہ یقینا میرے لئے آخری چار سالہ گیمز ہوں گے۔‘‘ بولٹ جو پہلے ہی 2008ء اور 2012ء اولمپکس میں اپنے سنسنی خیز مظاہروں سے چھ گولڈ میڈلس جیت چکے ہیں، بار بار کہہ چکے ہیں کہ وہ لندن میں 2017ء کی ورلڈ چمپئن شپس کے بعد اتھلیٹکس میں مسابقت کو خیرباد کہہ دینے کا منصوبہ رکھتے ہیں۔ انھیں یہی امید ہے کہ اگسٹ میں جب ریو گیمز میں کامپٹیشن کا وقت ختم ہوجائے تو اُن کے اولمپک تمغوں کی تعداد 9 گولڈز تک پہنچ چکی ہوگی۔ ’’اولمپکس میں میرا سب سے بڑا خواب دوبارہ تین گولڈ میڈلس جیتنا ہے۔ اسی پر میری توجہ مرکوز ہے، یہی کچھ میں چاہتا ہوں۔ اور اسی مقصد سے میں آگے بڑھ رہا ہوں کیونکہ وہی میرا اصل منشاء اور یہی میرا خواب ہے۔‘‘

TOPPOPULARRECENT