Tuesday , October 24 2017
Home / دنیا / زامبیا میں خاتون ملازمین کیلئے حجاب کا لزوم

زامبیا میں خاتون ملازمین کیلئے حجاب کا لزوم

بنجول۔ 6 جنوری (سیاست ڈاٹ کام)مغربی افریقہ کے ملک زامبیا میں اب سرکاری خاتون ملازمین کے لئے ڈیوٹی کے اوقات میں سَروں پر اِسکارف باندھنے کا لزوم متعارف کیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ زامبیا کو حالیہ دنوں میں ہی ایک ’’اسلامی ملک‘‘ قرار دیا گیا ہے۔ میڈیا کو حکم نامہ کی حاصل ہوئی ایک نقل کے مطابق تمام وزارتوں کے تحت کام کرنے والی خواتین کیلئے یہ لازم ہوگا کہ وہ سروں پر اسکارف (ججاب) باندھیں جس کا اطلاق 31 ڈسمبر سے صرف ڈیوٹی کے اوقات میں ہوگا۔ دریں اثناء وزارت تعلیم کے ایک سینئر عہدیدار نے بھی اس حکم نامہ کی توثیق کی۔ صدر یحییٰ جمعہ نے گزشتہ سال ڈسمبر کے وسط میں مسلمانوں کی اکثریت والے اس چھوٹے ملک کو ’’اسلامی ملک‘‘ قرار دیا تھا اور اس وقت انہوں نے یہ وعدہ بھی کیا تھا کہ وہ مسلم خواتین کے لباس پر کوئی قانون سازی نہیں کریں گے اور یہ بھی کہا تھا کہ انہوں نے خواتین کے لئے کسی اسلامی پولیس عہدیدار کا تقرر نہیں کیا ہے جو ہمیشہ ان کے لباس کی نگرانی کرتا رہے۔ خواتین جس طرح کا لباس پہننا چاہیں، پہن سکتی ہیں تاہم انہوں نے صرف حجاب کی حمایت کی ہے۔ زامبیا کی آبادی کا 90% مسلمانوں پر مشتمل ہے جبکہ عیسائیوں کا تناسب صرف 8% ہے۔ مابقی 2% دیگر مذاہب اور اقدار کے پابند ہیں۔

TOPPOPULARRECENT