Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / زرعی اراضیات کوائیلٹی پراجکٹس میں تبدیل کرنے کی سرگرمیاں تیز

زرعی اراضیات کوائیلٹی پراجکٹس میں تبدیل کرنے کی سرگرمیاں تیز

حیدرآباد ۔ /20 اکٹوبر (ایجنسیز) زرعی اراضیات کو کمرشیل اور رہائشی مقاصد کیلئے غیر زرعی اراضیات میں بدلنے کیلئے کافی سرگرمیاں دیکھی جارہی ہیں اور اس میں تیزی پیدا ہورہی ہے اور لوگ زرعی اراضیات کو کمرشیل اور رہائشی مقاصد کیلئے قابل استعمال بنانے میں جلدی کررہے ہیں ۔ نئے ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹرس کے اطراف اس کی مانگ بہت زیادہ ہے ۔ نئے اضلاع کے قیام کے اعلان کے بعد 600 ایکرس اراضیات کی تبدیلی کیلئے منظورہ دی گئی ہے اور مزید 800 ایکر اراضی کو کمرشیل اور رہائشی مقصد کیلئے تبدیل کرنے کی درخواستیں زیرالتواء ہیں ۔ منظوریاں دینے کے لئے مقامی ادارہ جات میں کرپشن کی شکایتوں کے درمیان حکومت نے اپرولس دینے کیلئے سینئر آئی اے ایس عہدیداروں پر مشتمل ایک ریاستی سطح کی ٹیکنیکل کمیٹی تشکیل دی ہے ۔ ایچ ایم ڈی اے حدود میں منظوریاں دینے میں بڑے پیمانے پر بے قاعدگیوں اور بدعنوانیوں کے منظر عام پر آنے کے بعد حکومت نے گزشتہ ایک سال سے زمین کے استعمال میں تبدیلی کی درخواستوں کو زیرالتواء رکھ دیا ہے ۔ حکومت نے زمین کے استعمال میں تبدیلی کیلئے دی گئی تمام منظوریوں کی انکوائری کا حکم دیا جس سے اس بات کا انکشاف ہوا کہ نہ صرف ایچ ایم ڈی اے حدود بلکہ میونسپل کارپوریشنس اور میونسپلٹیز میں بھی بے قاعدگیاں اور بدعنوانیاں ہوئی ہیں ۔ بہرحال ریاست میں 21 نئے اضلاع کے اضافہ سے اراضی کے استعمال میں تبدیلی کیلئے مانگ میں اضافہ ہوا ہے اور رئیلٹرس نئے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرس میں اس سے فائدہ حاصل کرنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ اس کمیٹی نے حال میں اس کے اجلاس میں درخواستوں کا جائزہ لیا ۔ جانچ کے بعد تقریباً 200 کے منجملہ صرف 95 درخواستیں منظوری کے قابل پائی گئیں ۔ کئی درخواستیں مالس ، اسکولس ، ہاسپٹلس ، شورومس وغیرہ کی تعمیر سے متعلق ہیں ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT