Tuesday , April 25 2017
Home / Top Stories / ’’سائیکل‘‘ طوفان میں بھی چل سکتی ہے : اکھیلیش یادو

’’سائیکل‘‘ طوفان میں بھی چل سکتی ہے : اکھیلیش یادو

بی جے پی کے ’’طوفان‘‘ کے تبصرہ پر ردعمل ، یو پی میں بھاری نقد رقم اور کثیر مقدار میں شراب ضبط
سیتا پور ؍ لکھیم پور کھیری۔6 فروری (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی کے ’’بی جے پی کا طوفان‘‘ کے تبصرہ پر جو اُن کے خلاف کیا گیا تھا، چیف منسٹر یوپی اکھیلیش یادو نے آج کہا کہ سماج وادی پارٹی کے ارکان جانتے ہیں کہ طوفان کے دوران ’’سائیکل‘‘ کیسے چلائی جائے۔ انہوں نے مودی پر الزام عائد کیا کہ وہ ریاست میں جرائم کے اعداد و شمار مسخ کرکے پیش کررہے ہیں۔ انہوں کا یہ تبصرہ سیتاپور میں منعقدہ انتخابی جلسہ اور لکھیم پور کھیری میں مودی کے علیگڑھ میں کل کئے ہوئے تبصرہ کے بعد منظر عام پر آیا جس میں انہوں نے کہا کہ جب ہوا 50 کیلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چل رہی ہو تو ایک نوجوان قائد اس کا سامنا کرسکتا ہے اور کسی سے مدد نہیں طلب کرتا، لیکن اس بار بی جے پی کی آندھی اتنی طاقتور ہے کہ چیف منسٹر کو خوف ہے کہ وہ اُڑ جائیں گے۔ مودی کے ریاست میں اب تک نظم و ضبط کی صورتحال پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے اکھیلیش یادو نے کہا کہ خدا ہی جانتا ہے کہ وزیراعظم کو (یوپی کے بارے میں) یہ اعداد و شمار کہاں سے حاصل ہوئے۔ وزیراعظم کو دیانت داری سے کام لیتے ہوئے تازہ ترین اعداد و شمار عوام کے سامنے پیش کرنے چاہئے تھے۔ اپنا طنز جاری رکھتے ہوئے چیف منسٹر نے کہا کہ اگر ملک میں ریاستوں کی صورتحال نظم و قانون کے اعتبار سے ابتر ہے تو اس اعتبار سے پہلے، دوسرے اور تیسرے مقام پر بی جے پی زیراقتدار ریاستیں ہی ہیں۔ بی جے پی پر تنقید کرتے ہوئے اکھیلیش نے کہا کہ ان کی پارٹی عوام کو قطاروں میں بینکوں کے سامنے کھڑے ہونے پر مجبور کردیتی ہے۔ کئی غریب عوام اپنی جانیں ضائع کرچکے ہیں، لیکن بی جے پی ان کو بچانے کیلئے آگے نہیں آئی۔ یہ سماج وادی پارٹی ہی تھی جس نے ایسے افراد کے ارکان خاندان کو 2 لاکھ روپئے کی مالی امداد کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ جو رقم بینک کھاتوں میں جمع کرائی جاتی ہے، کسی نے بھی 15 لاکھ روپئے جمع نہیں کروائے۔ وہ ہم سے یہ نہیں کہہ رہے ہیں کہ کالا دھن کہاں گیا، غلط طریقوں سے حاصل کی ہوئی رقم کہاں گئی۔ سماج وادی پارٹی ۔ کانگریس اتحاد کے بارے میں چیف منسٹر نے کہا کہ سماج وادی پارٹی کی سائیکل متحرک ہے۔ ہم کوئی کنجوس دوست نہیں رکھتے۔ ہم نے کافی تعداد میں نشستیں کانگریس کو دی ہیں۔ انہوں نے اتحاد کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس کا ہاتھ، سائیکل کی رفتار کو اور تیز کردے گا۔ انہوں نے عوام کے سامنے وضاحت کی کہ سماج وادی پارٹی نے کانگریس کو زیادہ نشستیں کیوں دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم فراخ دل ہیں اور پائیدار دوستی چاہتے ہیں۔ اچھے دن کی بی جے پی کی لفاظی پر طنز کرتے ہوئے اکھیلیش یادو نے کہا کہ یہ اچھے دن نوٹوں کی تنسیخ کے ذریعہ عوام کو حاصل ہوچکے ہیں۔ اب بھی وہ عوام سے اچھے دنوں کا وعدہ کررہے ہیں۔ جبکہ عوام کو بی جے پی نے قطاروں میں کھڑا کردیا ہے۔ انہوں نے عوام سے سماج وادی پارٹی اور کانگریس کے اتحاد کو ووٹ دینے کی اپیل کی۔ دریں اثناء مظفر نگر میں شراب کے تقریباً 200 کارٹون اور وارناسی میں 2,000 روپئے کے نئے نوٹ جن کی مالیت 5 لاکھ 10 ہزار روپئے تھی، ضبط کرلئے گئے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT