Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / سابق فوجیوں کو گمراہ کرنے مرکز پر کانگریس کا الزام

سابق فوجیوں کو گمراہ کرنے مرکز پر کانگریس کا الزام

وزیراعظم اور وزیردفاع کے متضاد بیانات سے الجھن برقرار
نئی دہلی ۔ 7 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے حکومت پر الزام عائد کیا ہیکہ وہ او آر او پی میں الٹ پھیر کے ذریعہ سابق فوجیوں کو گمراہ کررہی ہے اور وزیراعظم نریندر مودی اس مسئلہ پر حساب کتاب اور ہندوسہ میں الٹ پھیر میں مصروف ہیں۔ اس طرح حکومت نے او آر او پی کے کئی حساس مسائل کو دانستہ طور پر تاریکی کی نذر کردیا ہے۔ مقررہ مدت سے قبل سبکدوش ہونے والے مسلح فوج کے جوانوں کو او آر او پی کے مطابق وظائف دینے وزیراعظم نریندر مودی کی طرف سے دیئے گئے تیقن کے دوسرے دن کانگریس کے ترجمان ابھیشیک سنگھوی نے مودی سے سوال کیا کہ آیا ان افراد کو بھی یہ فوائد دیئے جائیں گے جو طبی وجوہات یا دیگر معذوریوں کے سبب خدمت کی انجام دہی سے قاصر رہے ہیں۔ سنگھوی نے الزام عائد کیا کہ ’’مودی حکومت 30 لاکھ سابق فوجیوں کو مسلسل گہری مخمصہ، مایوسی اور شکوک و شبہات میں مبتلاء کررہی ہے۔ او آر او پی کے کئی اہم نکات پر مجہول موقف اختیار کیا گیا ہے جس کے نتیجہ میں شکوک و شبہات برقرار ہیں‘‘۔ سنگھوی نے کہا کہ وزیردفاع منوہر پاریکر نے کہا تھا کہ رضاکارانہ طور پر سبکدوش ہونے والوں کو او آر او پی فوائد نہیں دیئے جائیں گے لیکن وزیراعظم نے کہا ہیکہ طبی وجوہات یا دوسری معذوری کے سبب خدمات کی انجام دہی سے قاصر سابق فوجی جوانوں کو او آر او پی دیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT