Sunday , August 20 2017
Home / جرائم و حادثات / سارق کے نیک عزائم پر پولیس کی اعتمادی مہنگی ثابت

سارق کے نیک عزائم پر پولیس کی اعتمادی مہنگی ثابت

ارتکاب جرم کے بعد اچھی چال چلن کا بھروسہ کے بعد اوجھل، سنتوش نائیک کی تلاش میں پولیس کو گلی گلی کے چکر
حیدرآباد۔15 جون (سیاست نیوز) تلنگانہ پولیس نے ایک سارق کی بات پر یقین کرلیا۔ جیل سے رہائی کے بعد اپنے رویہ میں تبدیلی کا اور پرسکون خوشحال زندگی بسر کرنے کا اس نے وعدہ کیا تھا لیکن اب پولیس اسی سارق کو شدت سے تلاش کررہی ہے۔ کل تک اس سارق کے ہمراہ تصویر کشی کروانے والی پولیس اب ان کی تصویر لے کر گلی گلی گھوم رہی ہے۔ تاہم وہ پولیس کے ہاتھ تو دور پولیس کی نظروں سے اوجھل ہوگیا ہے۔ ایسے حالات کا سامنا ان دنوں نارائن گوڑہ پولیس کررہی ہے۔ سنتوش نائک نامی ایک سارق جو ضلع محبوب نگر کا متوطن تھا۔ سرور نگر پولیس کے ہاتھوں گرفتاری کے بعد جیل منتقل کردیا تھا اور اب گزشتہ دنوں اس نے سرقہ کی سازش تیار کرتے ہوئے نابالغ لڑکوں کو مبینہ استعمال کیا اور ان کی مدد سے نارائن گوڑہ علاقہ سے 40 تولہ طلائی زیورات اور 5 لاکھ روپئے نقد رقم کا سرقہ کرلیا۔ سنتوش نائیک جب پولیس سے رجوع ہوا تھا کہ وہ جرائم کی دنیا چھوڑکر پرسکون زندگی بسر کرنا چاہتا ہے تو پولیس نے خود اپنی شخصی دلچسپی دکھاتے ہوئے آٹو کی خریداری میں اس کی مدد کی تھی اور سرکاری اسکیمات سے فائدہ حاصل کرنے کے لئے رہنمائی کی جارہی تھی اور ڈبل بیڈروم اسکیم میں بھی اسکو فائدہ پہنچانے کے اقدامات کے عہد کا آغاز ہوگیا تھا تاہم سنتوش نائیک پولیس کو یقین دلانے میں کامیاب ہوگیا اور اس نے اپنا راستہ تبدیل کرتے ہوئے نابالغ لڑکوں کو استعمال کرنا شروع کردیا اور نارائن گوڑہ میں سرقہ کی سنگین واردات کو انجام دیا۔ پولیس نارائن گوڑہ سنتوش نائیک کو شدت سے تلاش کررہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT