Thursday , August 17 2017
Home / دنیا / سارک کی اجتماعی طاقت سے استفادہ کی ضرورت : سشما

سارک کی اجتماعی طاقت سے استفادہ کی ضرورت : سشما

پوکھارا (نیپال) 17 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان نے آج سارک کی اجتماعی قوت کو بروئے کار لانے کی ضرورت پر زور دیا جیسا کہ وزیر اُمور خارجہ سشما سوراج نے کہاکہ جنوبی ایشیائی معاشی یونین وقت کی ضرورت ہے جس میں عظیم تر ارتباط کی گنجائش رہے۔ اُنھوں نے ریل اور موٹر گاڑیوں سے متعلق معرض التواء معاہدوں کو تیزی سے مکمل کرنے پر زور دیا۔ سشما نے بیان کیاکہ یوں تو جنوب ایشیائی تنظیم برائے علاقائی تعاون (سارک) کے ممالک انفرادی طور پر اچھی پیشرفت کررہے ہیں لیکن وہ اپنی مجموعی قوت کو مؤثر طور پر استعمال کرنے سے قاصر رہے ہیں۔ وہ 37 ویں سارک مجلس وزراء کی میٹنگ سے مخاطب تھیں۔ اُنھوں نے کہاکہ ہم نے سافٹا اور سرویسس کے معاملہ میں ایک معاہدہ جیسے اقدامات کے ذریعہ ہماری معیشتوں کو باہم مربوط کرنے کے بعض اہم فیصلے کئے ہیں لیکن اِس طرح کے فیصلوں کو مزیدمؤثر بنانے کی ضرورت ہے جس کے بعد ہم ساؤتھ ایشین اکنامک یونین کی تشکیل عمل میں لاسکتے ہیں۔
ہندوستان چینی جی ڈی پی کو پیچھے نہیں چھوڑ سکتا
بیجنگ 17 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان اگرچہ بڑی طاقت بننے کی صلاحیت رکھتا ہے لیکن وہ چین کی مجموعی دیسی پیداوار (جی ڈی پی) کو پیچھے نہیں چھوڑ سکتا، سرکاری چینی روزنامے نے آج یہ دعویٰ کیا اور نشاندہی کی کہ ہندوستان کے معاملہ میں غیر حقیقت پسندانہ تعریف و ستائش اور پیش قیاسیاں محض فرضی تصویر پیش کررہی ہیں۔ چین کی سست رو معیشت کے مقابل ہندوستان کی معاشی شرح ترقی کی اونچی پیش قیاسیوں نے چینی سرکاری میڈیا کو متحرک کردیا ہے، جس کا استدلال ہے کہ ہندوستان، چین کی جی ڈی پی تک پہونچنے کے معاملہ میں ابھی بہت پیچھے ہے۔ گلوبل ٹائمز میں شائع ایک آرٹیکل میں کہا گیا کہ یہ بہت ہی واضح ہے کہ ہندوستان کے معاملہ میں اتنی آسانی سے چین کو پیچھے نہیں چھوڑے گا جیسا کہ مغرب کی جانب سے پیش قیاسی کی گئی ہے۔ 2015ء میں چین کی جی ڈی پی 10.42 ٹریلین امریکی ڈالر تھی جو ہندوستان کے 2.18 ٹریلین ڈالر سے لگ بھگ 5 گنازیادہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT