Tuesday , October 24 2017
Home / سیاسیات / ساکشی مہاراج کی فوری گرفتاری کا مطالبہ

ساکشی مہاراج کی فوری گرفتاری کا مطالبہ

غنڈہ ایکٹ کے تحت مقدمہ دائر کرنے لالو پرساد کا زور
نئی دہلی / پٹنہ ۔ /8 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ ساکشی مہاراج کی جانب سے اسمبلی انتخابات والی ریاست اترپردیش کے شہر میرٹھ میں کئے گئے متنازعہ ریمارکس پر ان کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کرتے ہوئے جنتادل یو نے آج وزیراعظم نریندر مودی پر زور دیاکہ وہ ساکشی مہاراج کو پارٹی سے نکال کر مثال قائم کریں ۔ ان کے لئے بڑا امتحان ہوگا ۔ جنتادل یو ترجمان کے سی تیاگی نے الزام عائد کیا کہ ساکشی مہاراج نے رائے دہندوں کو مذہبی بنیاد پر منقسم کرنے کی کوشش کی ہے ۔ سپریم کورٹ نے حال ہی میں مذہب یا ذات پات کے نام پر ووٹ مانگنے کو ممنوع قرار دیا ہے ۔ اس کے بعد ہی ساکشی مہاراج کا یہ تبصرہ سامنے آیا ۔ وزیراعظم مودی کیلئے اصل امتحان یہی ہے کہ وہ ساکشی مہاراج کو پارٹی سے خارج کردیں ۔ اسی دوران آر جے ڈی کے صدر لالو پرساد یادو نے کہا کہ غنڈہ ایکٹ کے تحت ساکشی مہاراج کے خلاف مقدمہ دائر کیا جانا چاہئیے ۔ انہوں نے بالواسطہ طور پر ملک کی آبادی میں اضافہ کیلئے مسلمانوں کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے ۔ پٹنہ میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے لالو پرساد نے کہا کہ ساکشی مہاراج ہمیشہ سماج میں فرقہ وارانہ زہر پھیلاتے رہے ہیں ۔ انہیں فوری گرفتار کیا جانا چاہئے ۔ وہ بہت برا شخص ہے ۔ وہ سنت نہیں ہے ، وہ ایک غنڈہ ہے ، سنت کے بھیس میں پھاکنڈی ہے ۔ غنڈہ ایکٹ کے تحت گرفتار کرکے اسے حجیل بھیج دیا جائے ۔ وہ ہمیشہ سماج میں فرقہ پرستی کا زہر اگلتے رہتا ہے ساکشی مہاراج نے کل مبینہ طور پر یہ کہا تھا کہ ملک کی آبادی میں اضافہ کیلئے مسلمان ذمہ دار ہیں اور یہ لوگ چار بیویاں ، 40 بچوں کے اصول پر عمل کرتے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT