Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / ساکشی کی ہریانہ آمد ، فقیدالمثال استقبال ، 2.5 کروڑ کا چیک حوالے

ساکشی کی ہریانہ آمد ، فقیدالمثال استقبال ، 2.5 کروڑ کا چیک حوالے

اولمپک کی برونز میڈلسٹ سے ملازمت میں بھی ترقی کا وعدہ

چندی گڑھ ۔ 24اگسٹ ۔(سیاست ڈاٹ کام) ریو اولمپکس میں برونز میڈل جیتنے والی ریسلر ساکشی ملک کی آج ان کی ریاست ہریانہ میں آمد ہوئی ہے ، جہاں ان کا فقیدالمثال استقبال کیا گیا ۔ ساکشی جوکہ آج صبح کی اولین ساعتوں میں ہندوستان کے دارالحکومت دہلی پہونچیں ، وہاں سے وہ ہریانہ کیلئے روانہ ہوئی تھیں۔ اپنی ریاست ہریانہ میں پہونچنے پر برسراقتدار حکومت بھارتیہ جنتا پارٹی کے وزراء کے علاوہ ہریانہ کے وزیر اسپورٹس انیل وجئے جوکہ ریو میں ریاست کے اتھلیٹس کے نمائندے بھی تھے وہ یہاں پہونچے ۔ دہلی آمد کے بعد ساکشی جھجر ضلع کے بہادر گڑھ پہونچی جہاں ہریانہ کے چیف منسٹر منوہر لال کھتر اپنی کابینہ کے سینئر لیڈروں جن میں کیپٹن ابھینیو اور او پی دھنکر بھی شامل تھے ان کے ساتھ ساکشی کا شاندار استقبال کیا ۔ یہاں منعقدہ ایک شاندار تہنیتی تقریب میں چیف منسٹر نے 2.5 کروڑ کا چیک ریسلر کے حوالے کیا اور انھیں ہریانہ کی برانڈ ایمبسیڈر بنانے کے علاوہ ’’بیٹی پڑھاؤ ، بیٹی بچاؤ ‘‘ پروگرام کا بھی سفیر مقرر کیا گیا ہے ۔ اس موقع پر اظہارخیال کرتے ہوئے ہریانہ کے چیف منسٹر نے کہا کہ یہ ہمارے لئے ایک فخر کا لمحہ ہے کہ ہماری لڑکیوں نے ملک کا نام روشن کیا ہے ۔ جیسا کہ ساکشی اور پی وی سندھو نے ریو اولمپکس میں ہندوستان کے لئے میڈل حاصل کئے ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ ہریانہ سے تعلق رکھنے والے کھلاڑی ہمیشہ ہی ملک کیلئے اور اپنی ریاست کے لئے فخریہ کارنامے انجام دیئے ہیں۔

ہریانہ کے چیف منسٹر کھتر نے اس موقع پر مزید کہا کہ اُن کی حکومت اسپورٹس کے فروغ کے لئے کئی اقدامات کررہی ہے ۔ قطر کے بموجب ساکشی نے اپنے ملک ، اپنی ریاست ، اپنے کوچیس اور اپنے شہر کے علاوہ اپنے خاندان کا نام بھی روشن کیا ہے ۔ انھوں نے یہ خیالات ساکشی کے افراد خاندان کی موجودگی میں کیا ۔ چیف منسٹر نے کہا کہ ساکشی جوکہ ریلوے کی ملازم ہیں ، انھیں عنقریب ملازمت میں ترقی بھی دی جائے گی اور کہا کہ انھیں کلاس II کی ملازمت بھی دی جانے کا منصوبہ بنایا جارہا ہے ۔ اس موقع پر ساکشی نے اپنی مختصر تقریر میں تمام افراد سے اظہارتشکر بھی کیا جنھوں نے ان کا تعاون اور نیک تمناؤں کا اظہار کیا تھا ۔ ساکشی نے کہاکہ میں تمام افراد کے تعاون اور نیک تمناؤں کا شکریہ ادا کرتی ہوں اور ان سے گذارش کرتی ہوں کہ وہ مستقبل میں بھی اپنا تعاون جاری رکھیں ، تاکہ میں ملک کیلئے مزید میڈلس حاصل کرسکوں ۔ بیٹی پڑھاؤ ، بیٹی بچاؤ اسکیم کی ستائش کرتے ہوئے ساکشی نے کہا کہ اب اس میں ایک مزید جملہ کا اضافہ ’’بیٹی کھلاؤ‘‘ بھی شامل کیا جانا چاہئے تاکہ لڑکیوں کی اسپورٹس میں ہمت افزائی کی جاسکے ۔ 23 سالہ ریسلر کو اس موقع پر روایتی پگڑی بھی پہنائی گئی ۔ یاد رہے ساکشی نے ریو اولمپکس میں برونز میڈلس حاصل کرتے ہوئے ہندوستان کیلئے پہلا میڈل حاصل کیا تھا ۔ علاوہ ازیں ہریانہ کے چیف منسٹر نے ساکشی کے گاؤں میں اسپورٹس نرسری اور اسٹیڈیم تعمیر کرنے کا بھی اعلان کیا ہے ۔ چیف منسٹر نے کہاکہ موکھرا کھاس میں ایک اسپورٹس نرسری اور اسٹیڈیم بھی قائم کیا جائے گا ۔ ساکشی کا گاؤں موکھرا کھاس ہے جو پہلوان گاؤں کے نام سے بھی مشہور ہے۔ اس موقع پر ساکشی کے والد جوکہ اپنی بیٹی کے کارنامے پر کافی مسرور اور جذباتی دکھائی دے رہے تھے، انھوں نے کہاکہ میں ان کے کارنامہ پر کافی فخر محسوس کررہا ہوں ۔ اگر حقیقت میں کہا جائے تو میں ہی نہیں بلکہ سارا ہندوستان ساکشی پر فخر کررہا ہے ۔ انھوں نے مزید کہا کہ ماضی میں کچھ لوگ مجھ سے کہا کرتے تھے کہ ساکشی لڑکی ہے اور ریسلنگ اس کے لئے بہتر نہیں ہے لیکن جب ساکشی نے 2010 ء میں رشیا میں میڈل حاصل کیا تو اس کے بعد ایشین چمپیئن شپ ، کامن ویلتھ گیمس اور اب اولمپکس میں میڈل حاصل کرنے کے بعد سب ساکشی کی طرح بننا چاہتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT