Thursday , September 21 2017
Home / اضلاع کی خبریں / سبسیڈی ٹریکٹرس کی تقسیم میں بدعنوانیاں

سبسیڈی ٹریکٹرس کی تقسیم میں بدعنوانیاں

جگتیال میں رکن اسمبلی ٹی جیون ریڈی کی پریس کانفرنس
جگتیال /14 اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) رکن اسمبلی و ڈپٹی فلور لیڈر مسٹر ٹی جیون ریڈی نے پریس کانفرنس کو مخاطب کرتے ہوئے ٹی آر ایس پارٹی کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سرکار امداد کا بیجا استعمال اور مستحق کسانوں کو چھوڑکر کسانوں کے نام پر بڑے پیمانے پر دھاندلیاں کرتے ہوئے سبسیڈی رقم کی ہیرا پھیری کرتے ہوئے پارٹی تابیداروں کے ناموں کو حاصل کرنے کا الزام لگایا ۔ انہوں نے کہا کہ مستحق کسانوں کو نظر انداز کرنے اور ٹریکٹرس کی منظوری میں اصول و ضوابط کو نظر انداز کرنے کا بھی الزام عائد کیا ۔ اس موقع پر انہوں نے کہا کہ سبسیڈی ٹریکٹرس کی تقسیم میں ملوث متعلقہ محکمہ کے عہدیداروں کے خلاف لوک ایوکت میں شکایت کروں گا ۔ اس موقع پر انہوں نے تمام ثبوت کو میڈیا کے سامنے پیش کیا ۔ کسانوں کو ایک ساتھ ایک لاکھ قرض کو معاف کرنے کا انتخابات میں انتخابی منشور میں اعلان کیا گیا جس کو چار مراحل میں ادا کرنے سے کسانوں کو کافی نقصان اور فصل انشورنس بیما سے محروم کے ساتھ ساتھ دو ہزار کروڑ روپیوں کے سود کا بوجھ کسانوں پر پڑا ہے ۔ حکومت نے ایس ٹی ، ایس سی سب پلان کے مختص کردہ فنڈس نے ایک ہزار کروڑ روپئے چوتھے مرحلے کے قرض معاف کسان میں منتقل کرنے کا الزام لگایا ۔ ریاست بھر میں 35263 ہزار کسان قرض حاصل کرنے کے مستحق رہنے کے باوجود قرض حاصل کرنے سے محروم ہے ۔ جبکہ ریاست بھر میں ایس سی طبقہ کی آبادی کا تناسب 16 فیصد ہے اور ایس ٹی کا 9 فیصد ہے جملہ 25 فیصد میں 10 فیصد بھی کسان طبقہ استفادہ نہیں کر پارہا ہے ۔ اگر کسانوں کو ایک مشت قرض معاف کیا جاتا تو فائدہ ہوتا ۔ انہوں نے حکومت کی جانب سے کسانوں کے قرض 4 ہزار کروڑ کی ماہ اپریل میں ادائیگی کے اعلان کی خیرمقدم کیا اور کہا کہ کسانوں کی بھلائی اور ان کی ترقی کیلئے جو بھی اقدامات کئے جائیں گے ہم اس کا خیرمقدم کرتے ہیں ۔ لیکن کسانوں کے نام پر دوسروں کی بھلائی اور فائدہ پہونچایا جائے تو ناقابل قبول کہا ۔ ایس سی ، ایس ٹی طبقہ کو گذشتہ تین سال سے سب پلان کے تحت ایس سی طبقہ کو 25 ہزار کروڑ منظور کئے گئے جبکہ نصف یعنی 12 ہزار کروڑ ہی خرچ کئے گئے اور ایس ٹی طبقہ کیلئے 16 ہزار کروڑ مختص کئے گئے صرف 8 ہزار کروڑ ہی خرچ کرنے کا الزام لگایا اور فنڈس کو واپس چلے جانے کی بات کہی ۔ کسانوں کو فائدہ پہنچانا اور سہولتیں فراہم کرنا حکومت اور زرعی مارکٹ کی ذمہ داری ہے ۔ بجائے اس کے حکومت کسانوں کو بھلائی اور فائدہ پہونچانے کے تاجرین کی مدد کرنے حکومت اور مارکٹ پر الزام عائد کیا ۔ انہوں نے کہا کہ حالیہ دنوں جگتیال ضلع میں 40 سبسیڈی ٹریکٹرس کی تقسیم میں ہوئی بدعنوانیوں کا ثبوتوں کے ساتھ لوک آیوکت میں شکایت کریں گے اور انہوں نے ویجلنس کے ذریعہ تحقیقات کی جائے گی ۔ اس موقع پر سابقہ بلدیہ چیرمین گری ناگہ بھوشنم ، سابقہ زیڈ پی ٹی سی یلا ریڈی ، بنڈہ شنکر ، خواجہ کمال الدین ، محمد ریاض اور دیگر موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT