Thursday , March 23 2017
Home / Top Stories / سب ٹھیک ٹھاک ہے ـ: اکھیلیش ، انتخابی حکمت عملی طئے

سب ٹھیک ٹھاک ہے ـ: اکھیلیش ، انتخابی حکمت عملی طئے

سماج وادی پارٹی پر ترغیب و تخویف کا الزام: بی جے پی ، ملائم کو انتخابی نشان کی پیشکش
لکھنؤ ۔ 12 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) پہلے مرحلہ کے اسمبلی انتخابات کیلئے پرچہ جات نامزدگی کے ادخال سے ظاہر ہوتا ہیکہ سب کچھ ٹھیک ٹھاک ہے۔ چیف منسٹر یوپی اکھیلیش سنگھ یادو نے یہ دعویٰ کرتے ہوئے ارکان اسمبلی اور وزراء سے کہا کہ وہ ٹکٹوں کے بارے میں پریشان نہ ہوں۔ انہوں نے اپنے قریبی بااعتماد ساتھیوں کے ساتھ آج پارٹی کی حکمت عملی طئے کی۔ اپنے والد سماج وادی پارٹی کے صدر ملائم سنگھ یادو اور برسرپیکار چچا شیوپال یادو نئی دہلی میں مقیم ہیں اور الیکشن کمیشن کی جانب سے کل پارٹی کے انتخابی نشان سیکل کے تنازعہ کے الیکشن کمیشن کی جانب سے فیصلہ کے منتظر ہیں۔ اکھیلیش یادو اپنے قریبی بااعتماد ساتھیوں کے ساتھ اپنی سرکاری قیامگاہ پانچ کالیداس مارگ پر انتخابی حکمت عملی کو قطعیت دینے میں مصروف ہیں۔ اکھیلیش یادو نے اپنے قریبی ساتھیوں سے کہا کہ وہ انتخابی نشان کے تنازعہ کے پھندے میں نہ پھنسے۔ یہ الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہے اور وہ کل اس کی یکسوئی کرے گا۔ وہ پارٹی کارکنوں سے خطاب کررہے تھے۔ دریں اثناء حریف بی جے پی نے سماج وادی پارٹی پر الزام عائد کیا کہ یوپی میں سماج وادی پارٹی کے وزراء اور ارکان اسمبلی رائے دہندوں کو دھمکیاں دینے اور لالچ دینے میں مصروف ہیں۔ بی جے پی نے ریاستی چیف الیکشن آفیسر سے کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے یہ شکایت کی۔ بی جے پی قائدین جے پی ایس راٹھور اور کلدیپ پتی ترپاٹھی نے آج چیف الیکٹورل آفیسر پی وینکٹیش سے ملاقات کی اور انہیں صورتحال کی تفصیلات سے واقف کروایا۔ انہوں نے ان واقعات کا بھی حوالہ دیا جن میں سماج وادی پارٹی قائدین نے انتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کی ہے۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب لوک دل نے آج سماج وادی پارٹی کے سرپرست ملائم سنگھ یادو کو یو پی انتخابات میں حصہ لینے کیلئے اپنے انتخابی نشان کی پیشکش کی۔ اندیشہ ہیکہ سماج وادی پارٹی کا انتخابی نشان سیکل منجمد کردیا جائے گا۔ اس سوال پر کہ کیا اس معاملہ پر ملائم سنگھ یادو سے تبادلہ خیال کیا گیا ہے اور انہیں کچھ شرائط پیش کی گئی ہیں۔ لوک دل کے صدر نے کہا کہ ملائم سنگھ یادو ایک سینئر سوشلسٹ قائد ہیں اور وہ پارٹی کا صدر بننے کیلئے آزاد ہیں۔ کل الیکشن کمیشن ملائم سنگھ اور اکھیلیش سنگھ کے حامیوں کی سماعت کرے گا جنہوں نے سماج وادی پارٹی اور اس کے انتخابی نشان پر اپنا دعویٰ پیش کیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT