Wednesday , September 20 2017
Home / Top Stories / سرحد پر پہلی گولی نہ چلانے کا تیقن، پاکستانی وفد سے راجناتھ سنگھ کا خطاب

سرحد پر پہلی گولی نہ چلانے کا تیقن، پاکستانی وفد سے راجناتھ سنگھ کا خطاب

NEW DELHI, SEP 11 (UNI):- Union Home Minister Rajnath Singh meeting Director General, Pakistan Rangers (Punjab), Maj. Gen. Umar Farooq Burki (r), in New Delhi on Friday. (with story: DI 10). UNI PHOTO-26U

ہند ۔ پاک سرحدی محافظین کے مذاکرات کے ساتھ ساتھ جنگ بندی کی پاکستانی خلاف ورزی بھی جاری

نئی دہلی ۔ 11 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان پاکستان کی سمت سرحد پر پہلی گولی نہیں چلائے گا کیونکہ وہ اپنے تمام پڑوسی ممالک سے دوستانہ تعلقات کا خواہاں ہے۔ مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے ہندوستان کا دورہ کرنے والے پاکستانی وفد سے خطاب کرتے ہوئے تیقن دیا۔ پاکستانی وفد کی قیادت ڈائرکٹر جنرل پاکستان رینجرس میجر جنرل عمر فاروق برکی کررہے ہیں۔ اپنے ردعمل میں برکی نے راجناتھ سنگھ سے کہا کہ وہ صرف ایک فوج کے ڈائرکٹر جنرل ہے، ملک کے قائد نہیں ہے۔ جیسا کہ ہندوستان کے مرکزی وزیرداخلہ ہیں اس لئے وہ اس سلسلہ میں کوئی تیقن نہیں دے سکتے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ وہ راجناتھ سنگھ کا پیغام پاکستانی قیادت تک پہنچا دیں گے۔ راجناتھ سنگھ نے مزید کہا کہ پاکستانی رینجرس کے وفد کو تیقن دینا چاہئے کہ پاکستان سے ہندوستان میں دراندازی نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور پاکستان کو متحدہ طور پر دہشت گردی کی لعنت کا مقابلہ کرنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستانی کی طرح پاکستان بھی دہشت گردی کا شکار ہے۔ ہندوستان پاکستان کے ساتھ مختلف سطح پر مذاکرات چاہتا ہے اسی وجہ سے وزیراعظم نریندر مودی حال ہی میں وزیراعظم پاکستان نواز شریف سے روسی شہر اوفا میں ملاقات کرچکے ہیں۔ بدقسمتی سے مشیران قومی سلامتی سطح کی بات چیت نہیں ہوسکی۔ تاہم ہندوستان پاکستان کے ساتھ دوستانہ تعلقات چاہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ یہ بات رسمی طور پر نہیں بلکہ تہہ دل سے کہہ رہے ہیں۔ راجناتھ سنگھ نے کہا کہ سابق وزیراعظم اٹل بہاری واجپائی نے کہا تھا کہ ہم دوست تبدیل کرسکتے ہیں پڑوسی نہیں۔ یہی وجہ ہیکہ تمام پڑوسی ممالک سے ہم دوستانہ تعلقات رکھنا چاہتے ہیں۔ مرکزی وزیرداخلہ نے کہا کہ سرحدی افواج عظیم ہیں۔ اس لئے انہیں نشانہ نہیں بنایا جانا چاہئے۔ کسی کو بھی فوجیوں پر فائرنگ نہیں کرنی چاہئے۔ اگر کسی وجہ سے فائرنگ ہو بھی جائے تو دوسرے فریق کو جوابی کارروائی سے پہلے جانچ کرلینا چاہئے کہ ہتھیار اور بم کون استعمال کررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی ایشیاء کے تمام ممالک کی افواج اگر متحد ہوجائیں تو اتنی طاقتور ہوجائیں گی کہ کسی بھی صورتحال سے مقابلہ کرسکے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان میں مسلمانوں کے 72 فرقے ہیں۔ دنیا کے کسی بھی دوسرے ملک میں مسلمانوں کے اتنے فرقے بقائے باہم کے ساتھ نہیںرہتے۔ اس لئے ہندوستان پاکستان سے زیادہ اسلامی ہے۔ جموں سے موصولہ اطلاع کے بموجب پاکستانی رینجرس کے ساتھ بی ایس ایف کے مذاکرات کے دوران پاکستانی فوجیوں نے بلااشتعال جنگ بندی کی خلاف ورزی ضلع راجوری کے امیر پور سیکٹر میں آج علی الصبح کی تاہم کوئی جانی یا مالی نقصان نہیں ہوا۔

TOPPOPULARRECENT