Monday , September 25 2017
Home / شہر کی خبریں / سرکاری اداروں پر مسلم قائدین کی نامزدگی چیف منسٹر کا عظیم کارنامہ

سرکاری اداروں پر مسلم قائدین کی نامزدگی چیف منسٹر کا عظیم کارنامہ

اقلیتوں کی بھلائی و ترقی کے وعدہ کی تکمیل کا ثبوت ، ٹی آر ایس رکن اسمبلی عامر شکیل کا بیان
حیدرآباد۔/2 مارچ، ( سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے رکن اسمبلی محمد عامر شکیل نے 5 سرکاری اداروں پر مسلم اقلیت سے تعلق رکھنے والے قائدین کی نامزدگی کو کے سی آر کا کارنامہ قرار دیا اور کہا کہ چیف منسٹر نے اقلیتوں کی بھلائی اور ترقی کے بارے میں جو وعدے کئے تھے ان پر عمل آوری کا یہ واضح ثبوت ہے۔ عامر شکیل نے حالیہ تقررات پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ متحدہ آندھرا پردیش بلکہ ملک کی تاریخ میں یہ پہلا موقع ہے جب کسی چیف منسٹر نے غیر اقلیتی اداروں پر مسلمانوں کو مناسب نمائندگی دی ہے۔ 10 اداروں کے منجملہ 5 پر مسلم قائدین کا تقرر لائق ستائش ہے اور ہر شعبہ میں مسلمانوں کو نمائندگی دینے کی کوششوں کا آغاز ہے۔ عامر شکیل نے کہا کہ چیف منسٹر نے مسلمانوں کو مجالس مقامی اداروں اور مارکٹ کمیٹیوں میں بھی تحفظات فراہم کئے ہیں۔ مارکٹ کمیٹیوں کے صدور نشین کے انتخاب میں مسلمانوں کو موثر نمائندگی دی گئی ہے۔ رکن اسمبلی نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اقلیتوں کے بارے میں صرف زبانی وعدوں اور بیانات پر نہیں بلکہ عمل آوری پر یقین رکھتے ہیں۔ کسی بھی حکومت نے مسلمانوں کو غیر اقلیتی اداروں پر نامزد نہیں کیا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ سابق میں کانگریس اور تلگودیشم پارٹیوں نے مسلم اقلیت کو صرف ووٹ بینک کے طور پر استعمال کیا اور جب انہیں نمائندگی دیئے جانے کا وقت آیا تو نظرانداز کردیا گیا۔ برخلاف اس کے کے سی آر نے نئی ریاست کے پہلے ڈپٹی چیف منسٹر کی حیثیت سے مسلمان کو کابینہ میں شامل کیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست کے مسلمان حکومت کی کارکردگی سے مطمئن ہیں اور آئندہ انتخابات میں بھی ٹی آر ایس کی کامیابی یقینی ہے۔ محمد شکیل عامر نے کہا کہ چیف منسٹر نے اقلیتوں کی تعلیمی ترقی کیلئے 200 اقامتی اسکولس کے قیام کا فیصلہ کیا ہے جن میں سے 71 اسکولس گذشتہ سال سے کامیابی کے ساتھ کام کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کو قرض کی فراہمی میں 95 فیصد سبسیڈی فراہم کی جارہی ہے۔ ٹی آر ایس حکومت نے ہر سال اقلیتی بہبود کے بجٹ میں اضافہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اقلیتی نوجوانوں کو سیول سرویس امتحانات کیلئے نامور کوچنگ سنٹرس میں کوچنگ کا اہتمام کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اقامتی اسکولس کی جائیدادوں پر پبلک سرویس کمیشن سے تقررات کیلئے جلد ہی اعلامیہ جاری کردیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT