Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / سرکاری اراضیات کا تحفظ ‘ تحصیلداروں کا ذمہ

سرکاری اراضیات کا تحفظ ‘ تحصیلداروں کا ذمہ

اراضی مقدمات میں جوابی حلفنامہ داخل کرنے کلکٹر کی ہدایت
حیدرآباد ۔ /8 اکٹوبر (سیاست نیوز) کلکٹر حیدرآباد محترمہ یوگیتا رانا نے شہر کے تمام تحصیلداروں کو ہدایات دیں کہ وہ /27 اکٹوبر تک ہائیکورٹ میں زیرالتوا مقدمات سے متعلق کم از کم (30) جوابی حلفنامے داخل کرنے اقدامات کریں اور خالی اراضیات سے متعلق مقدمات پر توجہ مرکوز کریں ۔ حیدرآباد کے تحصیلداروں و عہدیداروں کے ساتھ اجلاس میں اراضی مقدمات لینڈ بینک اراضیات کو باقاعدہ بنانے بائیو میٹرک و دیگر موضوعات پر غورو خوص کیا اور موجودہ موقف کا جائزہ لیا ۔ محترمہ یوگیتا رانا نے کہا کہ ہائیکورٹ میں فی الوقت شہر کی مختلف اراضیات سے متعلق (796) مقدمات زیرتصفیہ ہیں ۔ اس سلسلہ میں جوابی حلفنامے داخل کرنے تحصیلداروں سے لاء آفیسر تبادلہ خیال کریں گے ۔ زائد مقدمات والے منڈلوں کیلئے ضرورت پڑنے پر درکار اسٹاف کو فوری فراہم کرنے کی اڈمنسٹریٹیو آفیسر کو ہدایات دیں ۔ کلکٹر حیدرآباد نے کہا کہ سرکاری اراضیات کا تحفظ کرنا تحصیلداروں کی اہم ذمہ داری ہے ۔ وہ نچلی عدالتوں کے فیصلوں پر بالائی عدالتوں میں کیس نہ ہارنے کی تیاری پہلے سے کر رکھیں ۔ ضلع کلکٹر نے آصف نگر و بہادر پورہ تحصیلداروں کو ان کی بہتر کارکردگی کی ستائش کی ۔ علاوہ ازیں گولکنڈہ ، مشیرآباد اور سعیدآباد و دیگر منڈلوں کے عہدیداروں نے بھی (37) ایکڑس (16) گنٹے لینڈ پارشلوں کو لینڈ بینک میں درج کروا کر (75) کروڑ روپئے مالیتی قیمتی اراضیات کا تحفظ کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ہر سرکاری ملازم کو چاہئیے کہ وہ بائیو میٹرک درج کروائیں بصورت دیگر ان کو غیر حاضر تصور کیا جائیگا ۔ مشینس دستیاب نہ ہوں تو فوری فراہم کئے جانے چاہئیے ۔ ضلع کلکٹر نے این او سی مسترد کئے جانے والے مقدمات کی اراضیات کو تنقیح کرکے لینڈ بینک میں درج کروانے کی ہدایات دیں ۔ اجلاس میں انچارج جوائنٹ کلکٹر شریمتی نکھیلا ، ڈپٹی کلکٹر رادھیکارامتی ۔ لا آفیسر گیتا ۔ ایس ڈی سی ایل پی مسٹر مدھو موہن و دیگر شریک تھے ۔

TOPPOPULARRECENT