Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / سرکاری اسکولس میں بیت الخلاؤں کی تعمیر کو منظوری

سرکاری اسکولس میں بیت الخلاؤں کی تعمیر کو منظوری

مرکزی حکومت کی اسکیم سے تعمیرات کو ہری جھنڈی ، اسکول انتظامیہ کا بجٹ ناکافی
حیدرآباد۔23 جولائی (سیاست نیوز) آئندہ ماہ ریاست کے سرکاری اسکولوں میں بیت الخلا کی سہولت دستیاب ہوجائے گی۔ بتایا جاتا ہے کہ ریاست تلنگانہ میں موجود سرکاری اسکولوں میں 1946 بیت الخلائوں کی تعمیر کو جاریہ ماہ کے اواخر تک مکمل کرلیا جائیگا۔ مرکزی حکومت کی وزارت فروغ انسانی وسائل کی اسکیم کے مطابق 36 ہزار 454 بیت الخلاء کی تعمیر کو منظوری فراہم کی گئی ہے جن میں ریاست تلنگانہ کو حاصل تعداد کی عاجلانہ تکمیل کو یقینی بنانے کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ سرکاری اسکولوں میں بیت الخلاء کی تعمیر سے مسائل کا حل نہیں ہوتا بلکہ ان کی نگہداشت کو بہتر بنانے کے لئے اقدامات ضروری ہوتے ہیں اسی لئے اسکولی انتظامیہ کی جانب سے محکمہ تعلیم کو روانہ کردہ درخواست کے مطابق انتظامیہ میں نگہداشت کے لئے علیحدہ بجٹ کی تخصیص کی خواہش ظاہر کی ہے جس پر محکمہ کی جانب سے غور کیا جارہا ہے۔ اسکولوں کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ سرکاری اسکولوں میں نگہداشت کے لئے جو بجٹ بطور گرانٹ دیاجاتا ہے وہ ناکافی ہے کیوں کہ فی الحال حکومت کی جانب سے 5 کمروں تک کے اسکولس کے لئے 5 ہزار روپئے ماہانہ اور 5 کمروں سے زائد کے اسکول کے لئے 7 ہزار روپئے ماہانہ دیئے جارہے ہیں جس میں نگہداشت کے علاوہ اسٹیشنری وغیرہ کے اخراجات شامل رکھے جاتے ہیں ایسی صورت میں بیت الخلائوں کی نگہداشت ممکن نہیں ہوگی۔ اسی لئے نو تعمیر شدہ بیت الخلائوں کی نگہداشت کے لئے اضافی گرانٹ بھی دیاجانا ضروری ہے۔ پبلک سیکٹر یونٹ اور کارپوریٹ اداروں کی جانب سے ریاست میں 1774 بیت الخلاء تعمیر کئے جارہے ہیں جبکہ 1268 زیر تعمیر ہیں۔ اسی طرح کارپورٹ اداروں نے 471 بیت الخلائوں کی تعمیر کی ذمہ داری لی تھی جن میں 440 کی تعمیر مکمل کرلیئے جانے کی اطلاع ہے جبکہ31 زیر تعمیر ہیں۔

TOPPOPULARRECENT