Tuesday , September 19 2017
Home / شہر کی خبریں / سرکاری تعلیمی نظام پسماندہ طبقات کے بچوں کیلئے معاون

سرکاری تعلیمی نظام پسماندہ طبقات کے بچوں کیلئے معاون

پی ڈی ایس یو کی کانفرنس کے ضمن پوسٹر کا رسم اجراء، پروفیسر کودنڈا رام و دیگر کا بیان
حیدرآباد 18 نومبر (سیاست نیوز) سرکاری تعلیمی نظام معاشی طور پر پسماندہ طبقات کے بچوں کو تعلیم یافتہ بنانے میں کارگر ثابت ہوگا۔ مرکزی اور ریاستی حکومتوں کو چاہئے کہ وہ سرکاری اسکول، کالجس اور یونیورسٹیز کو بنیادی سہولتوں سے آراستہ  کرتے ہوئے سرکاری تعلیمی نظام سے متعلق عوام میں شعور بیداری مہم چلائیں تاکہ معاشی طور پر پسماندہ بچوں کو بھی معیاری تعلیم مل سکے۔ چیرمین تلنگانہ جوائنٹ ایکشن کمیٹی پروفیسر کودنڈا رام نے پی ڈی ایس یو کی مجوزہ ریاستی کانفرنس کے پوسٹرس کی اجرائی کے موقع پر یہ بات کہی۔ پروفیسر کودنڈا رام نے کہاکہ آزاد ہندوستان کی تاریخ کے ممتاز دانشور، سیاسی قائدین، مذہبی رہنما، مجاہدین جنگ آزادی، سائنس دانوں نے سرکاری اسکولس میں تعلیم حاصل کرتے ہوئے شہرت کی بلندیوں پر جگہ حاصل کی اور آزادی کے متوالوں نے بھی آزاد ہندوستان میں سرکاری ذریعہ تعلیم کے خواب کو شرمندہ تعبیر کرنے کے لئے اپنی جانوں کی قربانی دی ہیں۔ کودنڈا رام نے کہاکہ خانگی اور کارپوریٹ تعلیمی اداروں کی بڑھتی اجارہ داری کے سبب قومی سطح پر سرکاری ذریعہ تعلیم تباہی کے دہانے پر پہنچ گیا اور اس کا سست اثر معاشی طور پر پسماندہ خاندانوں پر پڑا جو اپنے بچوں کو خانگی تعلیمی اداروں میں داخلوں سے محروم رہے جبکہ سرکاری ذریعہ تعلیم کا معیار پوری طرح ختم ہوگیا۔ کودنڈا رام نے کہاکہ خانگی اور کارپوریٹ تعلیمی اداروں نے حکومتوں کی پشت پناہی حاصل کرتے ہوئے اپنی اجارہ داری کو قائم بھی رکھا۔ پروفیسر کودنڈا رام نے کہاکہ سرکاری تعلیمی اداروں کو بنیادی سہولتوں سے آراستہ کرنے اور معیاری تعلیم فراہم کرنے سے نہ صرف تلنگانہ بلکہ قومی سطح پر بڑھتی ناخواندگی کا خاتمہ یقینی ہے۔ پروفیسر کودنڈا رام نے اس حساس موضوع پر مسلسل بحث اور مؤثر تجاویز کے ساتھ حکومتوں سے رجوع ہونے کی بھی تجویز پیش کیا۔ انھوں نے کہاکہ حکومتیں بالخصوص ریاستی حکومت کو چاہئے کہ وہ سرکاری اسکولس اور کالجس میں معیاری تعلیم فراہم کرنے اور مذکورہ تعلیمی اداروں کو بنیادی سہولتوں سے لیس کرتے ہوئے معاشی طور پر پسماندہ بچوں کو ان تعلیمی اداروں میں داخلوں کے لئے راغب کریں۔ انھوں نے کہاکہ تعلیم یافتہ معاشرہ جہاں پر ریاست کی ترقی کی ضمانت ثابت ہوگا وہیں سماج سے برائیوں کو بھی ختم کرنے مددگار رہے گا۔ پروفیسر کودنڈا رام نے مزید کہاکہ 18 ، تا  20 ڈسمبر کو عثمانیہ یونیورسٹی میں پی ڈی ایس یو کے زیراہتمام منعقد ہونے والی پہلی ریاستی تلنگانہ کانفرنس میں تعلیم کے اس مسئلہ پرمذاکرات کی اُمید کا بھی اظہار کیا۔ صدر تلنگانہ نیو ڈیموکریسی سی پی آئی ایم ایل گوردھن ریڈی نے مجوزہ کانفرنس کی تفصیلات پیش کیں۔ انھوں نے کہاکہ کانفرنس میں تلنگانہ کے ممتاز سماجی جہدکاروں کے علاوہ تلنگانہ تحریک کی تمام سرکردہ شخصیتیں شرکت کریں گی۔ صدر پروگریسیو ڈیموکریٹک اسٹوڈنٹ یونین پی ڈی ایس یوپی نرسیا اور دیگر بھی اس موقع پر موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT