Saturday , May 27 2017
Home / شہر کی خبریں / سرکاری دواخانوں میں زچگی کروانے والی قبائیلی خواتین کو ’ اماوڈی ‘ اسکیم

سرکاری دواخانوں میں زچگی کروانے والی قبائیلی خواتین کو ’ اماوڈی ‘ اسکیم

زچہ اور بچہ کی صحت و نگہداشت کے لیے اشیاء کی فراہمی ، وزیر صحت ڈاکٹر لکشما ریڈی
حیدرآباد ۔ 15۔ مارچ (سیاست نیوز) وزیر صحت ڈاکٹر لکشما ریڈی نے کہا کہ ریاست کے قبائلی علاقوں میں سرکاری دواخانوں میں زچگی کرانے والی تمام خواتین کو ’’اماوڈی‘‘ کٹ فراہم کیا جائے گا جس میں ماں اور بچہ کی بہتر صحت کی نگہداشت کے سلسلہ میں 11 مختلف ایٹمس شامل رہیں گے۔ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران ٹی آر ایس ارکان شریمتی اجمیرا ریکھا ، ریویندر کمار اور دیگر کے سوال کے جواب میں وزیر صحت نے کہا کہ حکومت نے قبائلی علاقوں میں اس اسکیم کا آغاز کیا ہے تاکہ ماں اور بچہ کی بہتر نگہداشت کو یقینی بنایا جاسکے ۔ اماوڈی یعنی ماں کی گود کے نام سے اس اسکیم کا ارکان اسمبلی نے خیرمقدم کیا۔ وزیر صحت نے بتایا کہ پہلے مرحلہ میں قبائلی علاقوں میں اسکیم پر عمل آوری کی جائے گی ۔ ماں اور بچہ کیلئے فراہم کئے جانے والے کٹ میں بچہ کی نگہداشت سے متعلق 11 اور ماں کے لئے 4 اشیاء شامل کی جائیں گی۔ اس کٹ کی مالیت 2000 روپئے ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے معیاری اشیاء کی سربراہی کو یقینی بنایا جائے گا۔ لکشما ریڈی نے کہا کہ دیہی علاقوں اور خاص طور پر قبائلی علاقوں میں ڈلیوری کے سلسلہ میں مناسب نگہداشت کی کمی ہے، لہذا خواتین کو باشعور بنانے کیلئے حکومت نے کٹ سربراہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ قبائلی خواتین گھروں میں ڈلیوری کے بجائے سرکاری دواخانے اور سرکاری سہولتوں سے استفادہ کرتے ہوئے زچگی کرائیں گے۔ حکومت نے ماں اور بچہ کی نگہداشت کیلئے خواتین کو تحفہ کے طور پر یہ اسکیم شروع کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ڈاکٹرس کے مشورہ سے کٹ میں مختلف ضروری اشیاء شامل کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری دواخانوں میں بہتر سہولتوں کی فراہمی کے اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے فراہم کئے جانے والا کٹ تین ماہ تک استعمال کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری دواخانوں میں زچگی کرانے والی خواتین کو حکومت کی جانب سے 12000 روپئے کی امداد دی جائے گی ۔ اگر لڑکی تولد ہو تو مزید ایک ہزار روپئے کی امداد شامل رہے گی۔ ٹی آر ایس کے رکن شریمتی اجمیرا ریکھا نے کہا کہ حکومت کی جانب سے اسکیم کے اعلان کا قبائلی علاقوں میں خیرمقدم کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ قبائلی علاقوں میں عام طور پر گھروں میں زچگی کا رجحان ہے اور طبی سہولتوں کی کمی کے باعث اموات میں اضافہ ہورہا ہے ۔ ایسے میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے خواتین و بچوں کی بھلائی کو پیش نظر رکھتے ہوئے منفرد اسکیم کا آغاز کیا ہے ۔ انہوں  نے یہ اسکیم تمام خواتین کیلئے قابل عمل بنانے کی تجویز پیش کی ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT