Tuesday , September 26 2017
Home / اضلاع کی خبریں / سرکاری دواخانوں میں ڈاکٹرس کی تساہلی ناقابل برداشت

سرکاری دواخانوں میں ڈاکٹرس کی تساہلی ناقابل برداشت

کریم نگر میں جائزہ اجلاس سے ریاستی وزیر ایٹالہ راجندر کی مخاطبت

کریم نگر ۔ 22 ؍ مئی (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)  طبی خدمات کی فراہمی کے لئے ریاستی حکومت کی جانب سے بے دریغ فنڈس مہیا کر رہی ہے ۔ لیکن ڈاکٹرس فرض شناسی کے ساتھ ذمہ دارانہ طریقہ خدمات انجام نہیں دے رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار ایٹالہ راجندر وزیر نے سرکاری دواخانہ کی ترقیاتی کمیٹی کے چیرمین تلا اماں کی صدارت میں منعقدہ جائزہ اجلاس میں کیا ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے دواخانے میں تمام سہولتیں فراہم کی ہیں لیکن ڈاکٹرس دلچسپی سے خدمات انجام نہیں دے رہے ہیں ۔ دواخانہ میں رشوت خوری عام ہوچکی ہے ۔ زیڈ پی ٹی سی شرت راؤ نے الزام عائد ہے کہ ڈی سی ایچ اشوک کمار ایک ملازم سے پچاس ہزار روپئے حاصل کرنے کا اُن کے پاس ثبوت ہے ۔ ایٹالہ راجندر انے ان کے خلاف کارروائی کرنے کے احکامات دیئے ہیں ۔ ایک اور ڈاکٹر مریض کے علاج کے لئے ایک ماہ کی تاخیر کر دی ۔ اس سلسلہ میں بھی تحقیقات کروانے کا ایٹالہ راجندر نے حکم دیا ۔ ڈاکٹروں کی تنخواہیں معقول ہیں انہیں ٹی اے اور ڈی اے بھی دیا جاتا ہے لیکن ڈاکٹرس تساہلی سے خدمات انجام دے رہے ہیں ۔ دواخانے میں مریضوں کی جو غذا دی جا رہی ہے وہ بھی ناقص ہے ۔ زیڈ پی چیرمین تلااماں نے گتہ داروں کو طلب کر کے حکم دیا کہ وہ دواخانے میں صاف ستھری غذا مریضوں کو فراہم کی جائے ۔ دواخانے میں پینے کے پانی کی قلت نہ ہو ۔ میئر ویندرسنگھ کو انہوںنے ذمہ داری دی ۔ تلا اماں نے کہاکہ سرکاری دواخانے کی خبریں اخبارات میں شائع ہوتی رہتی ہیں سرکاری دواخانے میں مریضوں کو یہ ترغیب دی جا رہی ہے کہ وہ اپنا علاج خانگی دواخانوں میں کروائیں یہ طریقہ کار کہاں تک درست ہے۔ ڈسٹرکٹ کلکٹر نیتوپرسادنے کہاکہ دواخانے کو ضرورت کے مطابق فنڈس مہیا کئے جائیں گے ۔ ڈاکٹرس کو اپنے پیشہ میں دلچسپی لینے کی شدید ضرورت ہے ۔ اس موقع پر ڈی ایم ایچ اور راجیشم بھی موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT