Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / سرکاری ملازمین کی 42 روزہ ہڑتال کو خصوصی رُخصت تصور کرنے حکومت تلنگانہ کا فیصلہ

سرکاری ملازمین کی 42 روزہ ہڑتال کو خصوصی رُخصت تصور کرنے حکومت تلنگانہ کا فیصلہ

حیدرآباد۔12 نومبر (سیاست نیوز) علیحدہ ریاست تلنگانہ کے مطالبہ پر دو سال قبل سرکاری ملازمین کی منظم کردہ 42 روزہ عام ہڑتال کے ایام کو خصوصی رُخصت تصور کرنے کا حکومت تلنگانہ نے فیصلہ کیا۔ اس سے متعلق فائیل پر آج چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے دستخط کردیئے۔ باوثوق سرکاری ذرائع نے یہ بات بتائی اور کہا کہ حصول علیحدہ ریاست تلنگانہ کے مطالبہ پر تلنگانہ کے تمام ملازمین نے سلسلہ وار 42 روزہ ہڑتال منظم کرکے اہم رول ادا کیا تھا۔ اس عام ہڑتال کا مرکز پر زبردست اثر ہوا تھا جس کے نتیجہ میں علیحدہ ریاست تلنگانہ حاصل کرنے میں کافی مدد ملی۔ بہت جلد اس سلسلے میں احکامات جاری کئے جائیں گے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ گزشتہ عرصہ کے دوران منعقدہ اسمبلی و لوک سبھا انتخابات کے موقع پر ٹی آر ایس نے سرکاری ملازمین کی جانب سے منظم کردہ 42 روزہ عام ہڑتال کو خصوصی رُخصت میں شمار کرنے کا اپنے انتخابی منشور میں وعدہ کیا تھا اور بعد انتخابات ٹی آر ایس کے برسراقتدار آنے سے اب تک تلنگانہ ملازمین یونین قائدین نے اس مسئلہ پر کوئی خصوصی توجہ نہیں دی اور صرف حکومت سے نمائندگی کی جاتی رہی لیکن حکومت نے اس مسئلہ کا جائزہ لے کر بالآخر عام ہڑتال کے ایام کو رُخصت خصوصی تصور کرنے کا فیصلہ کیا۔
انتخابی فہرست میں نارائنا کا نام موجود
حیدرآباد۔ 12 نومبر (آئی این این) گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن (جی ایچ ایم سی) نے سی پی آئی لیڈر کے نارائنا کا نام انتخابی فہرست رائے دہندگان میں شامل نہ رہنے کی اطلاعات کی تردید کی ہے۔ ڈپٹی میونسپل کمشنر مہیندر نے صحافتی گوشوں میں شائع خبروں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ کے نارائنا کا نام اور EPIC نمبر انتخابی فہرست میں موجود ہے ۔ اس کے علاوہ کے وسومتی اہلیہ کے نارائنا کا نام اور نمبر بھی موجود ہے۔

TOPPOPULARRECENT