Saturday , June 24 2017
Home / شہر کی خبریں / سرکاری نظام میں کوتاہیوں کو ختم کرنے کا مطالبہ

سرکاری نظام میں کوتاہیوں کو ختم کرنے کا مطالبہ

ایس آئی او کی پریس کانفرنس، لائق احمد خان عقیل کا خطاب
حیدرآباد۔ 4 مارچ (سیاست نیوز) اسٹوڈنٹ اسلامک آرگنائزیشن( ایس آئی او) نے ریاست تلنگانہ میںسرکاری تعلیمی نظام کے اندر پائی جانے والی کوتاہیوں کو دور کرنے کا حکومت تلنگانہ سے پرزور مطالبہ کیا ۔ آج یہاں منعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صدر ایس آئی اولائق احمد خان عقیل نے کہاکہ ’’ تلنگانہ میں تعلیمی نظام‘‘ کے عنوان پر ماہرتعلیمات کے مختلف مضامین پر مشتمل ایک کتاب بھی ایس آئی ائو کی جانب سے جاری کی گئی ہے جس کا مقصد تلنگانہ کے سرکاری شعبہ تعلیم میںدرکار اصلاحات کی طرف ریاستی حکومت کی توجہہ مبذول کروانا ہے ۔انہو ں نے کہاکہ پرائمری اسکولوں میںتعلیم کا سلسلہ منقطع ہونے کے فیصد میں آئے دن اضافہ ہی ہوتا جارہا ہے جس پر حکومت کی توجہہ ضروری ہے۔انہو ںنے مزیدکہاکہ مجوزہ بجٹ اجلاس میںحکومت تلنگانہ کوچاہئے کہ وہ کے جی سے پی جی تک مفت تعلیم کی فراہمی کے متعلق وضاحتی دستاویز جاری کرتے ہوئے مستقبل میں اپنے اس وعدے پر عمل آوری کے لئے ایک وقت مقرر کرے۔ انہوں نے کہاکہ سرکاری پرائمری اسکولس کو بند کرکے وہاں پر اقامتی اسکولس قائم کئے جارہے ہیں جو قابلِ تشویش ہے۔انہو ں نے کہاکہ اب تک تلنگانہ میں486سرکاری اسکولس کو بند کردیاگیا ہے ۔اور کہاکہ ریاست کی سب سے بڑی اور اعلی یونیورسٹی عثمانیہ کے علاوہ کسی دوسری یونیورسٹی میںمعیاری انفراسٹرکچر اور تدریسی عملے کا تقرر عمل میںنہیںلایاجارہا ہے جس سے طلبہ کے تعلیمی سال پر اثر پڑرہا ہے۔انہوں نے خانگی اسکولوں میں من مانی فیس وصولی پر بھی کنٹرول کے لئے ایک ریگولیٹری بورڈ قائم کرنے کا حکومت تلنگانہ سے مطالبہ کیا۔کلیم احمد خان‘ ڈاکٹر طلحہٰ غیاث الدین‘ محمد یاسر علی اور دیگر بھی اس موقع پر موجود تھے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT