Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / سستی شراب پر حکومت کے فیصلہ کی سخت مخالفت

سستی شراب پر حکومت کے فیصلہ کی سخت مخالفت

نئی پالیسی سے دست برداری کا مطالبہ، گن پارک پر مہیلا کانگریس کا احتجاج
حیدرآباد /21 اگست (سیاست نیوز) تلنگانہ مہیلا کانگریس نے سستی شراب کو عام کرنے حکومت کے فیصلہ کی مخالفت کرتے ہوئے شراب کی بوتلوں کو توڑ پھوڑکر گن پارک پر احتجاجی دھرنا منظم کیا۔ اس دوران تلنگانہ مہیلا کانگریس کی صدر این شاردا نے کہا کہ شراب پر امتناع عائد کرنے کی بجائے حکومت صرف سرکاری آمدنی کو مدنظر رکھتے ہوئے ریاست میں نئی اکسائز پالیسی کا اعلان کیا ہے، جس کی کانگریس پارٹی سخت مذمت کرتی ہے اور اس نئی پالیسی سے فوری دست برداری اختیار کرنے حکومت سے مطالبہ کرتی ہے، بصورت دیگر تلنگانہ میں بڑے پیمانے پر احتجاجی مہم شروع کی جائے گی۔ قبل ازیں گاندھی بھون میں تلنگانہ مہیلا کانگریس کا ایک اجلاس منعقد ہوا، جس میں ریاست کی تازہ سیاسی حالت اور خواتین پر مظالم کے علاوہ دیگر مسائل کا جائزہ لیا گیا، جس میں صرف 15 روپئے میں سستی شراب فروخت کرنے کے فیصلہ کے خلاف ایک قرارداد بھی منظور کی گئی۔ این شاردا نے کہا کہ شراب کی لعنت نے کئی خاندانوں کی زندگی تباہ کردی ہے، جب کہ کئی خاندان قرضوں سے پریشان ہیں۔ بچوں کی صحیح پرورش نہیں ہو پا رہی ہے، اس کے علاوہ ایسے لوگ سماجی مسائل کا بھی شکار ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ان خاندانوں کو اس لعنت سے نجات دلانے کی بجائے حکومت اس میں مزید اضافہ کی کوشش کر رہی ہے، جب کہ شراب کے نشہ میں اضافہ ہونے کے سبب خواتین مزید مظالم کا شکار ہوں گی اور کئی غریب خاندان تباہ ہو جائیں گے۔ انھوں نے کہا کہ ناکافی بارش سے عوام کو پینے کا پانی ملنا مشکل ہے، جب کہ حکومت سستی شراب کو عوام کے گھروں تک پہنچانے کا منصوبہ بنا رہی ہے، جس کی مہیلا کانگریس سخت مذمت کرتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر خواتین کی ترقی کے بارے میں بلند بانگ دعوے کرتے ہیں، مگر ریاست کی آمدنی بڑھانے کے لئے خواتین اور سماجی مسائل کو یکسر نظرانداز کر رہے ہیں۔ ریاستی کابینہ میں خواتین کو شامل نہ کرکے خواتین سے ناانصافی کرنے والے چیف منسٹر تلنگانہ نئی اکسائز پالیسی کا اعلان کرکے خواتین کے ساتھ ظلم و زیادتی کے واقعات میں اضافہ کے ذمہ دار بن رہے ہیں۔ انھوں نے حکومت کی شراب پالیسی کے خلاف اضلاع اور منڈل سطح پر احتجاجی مہم شروع کرنے کا اعلان کیا۔

TOPPOPULARRECENT