Wednesday , September 20 2017
Home / Top Stories / سشماسوراج کے استعفیٰ کا مطالبہ مسترد، تحریک التوا کو شکست

سشماسوراج کے استعفیٰ کا مطالبہ مسترد، تحریک التوا کو شکست

کانگریس حکومتوں نے قطروچی اور اینڈرسن کی مدد کی تھی، وزیرخارجہ کا جوابی وار ، مودی پر راہول کی تنقید

نئی دہلی ۔ 12 اگست (سیاست ڈاٹ کام) وزیرامور خارجہ سشماسوراج نے ان کی برطرفی کیلئے جاری حملوں پر جوابی وار کرتے ہوئے کانگریس کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور اوٹاویو قطروچی، وارین اینڈرسن کو ہندوستان سے فرار ہونے میں مدد کیلئے رقم لینے کا الزام عائد کیا۔ حکومت نے بھی سشماسوراج کے استعفیٰ کا مطالبہ یکسر مسترد کردیا ہے۔ ایوان میں آج کانگریس لیڈر ملک ارجن کھرگے کی جانب سے کئی سوالات اٹھائے جانے پر سشماسوراج نے آنجہانی وزیراعظم راجیو گاندھی اور ان کی حکومت پر الزامات عائد کئے۔ اس کے علاوہ انہوں نے راہول گاندھی پر بھی شدید تنقید کی جس کے نتیجہ میں اپوزیشن اور حکومت کے مابین کشیدگی مزید بڑھ گئی ہے۔ اس طرح کل ختم ہونے والا پارلیمنٹ کا سیشن عملاً غیرکارکرد ثابت ہوا۔ ایک ماہ طویل سیشن ختم ہونے سے ایک دن قبل آج ایوان کی کارروائی چلائی گئی جس میں کانگریس نے سشماسوراج کے استعفیٰ کا مطالبہ کیا اور فریقین نے تحریک التوا پر مباحث سے اتفاق کیا تھا لیکن دن کے ختم پر تحریک التوا کو ندائی ووٹ سے شکست دے دی گئی جبکہ کانگریس نے ایوان سے واک آوٹ کیا

اور وزیرفینانس ارون جیٹلی نے یہ کہتے ہوئے استعفیٰ کا مطالبہ مسترد کردیا کہ تمام الزامات بے بنیاد ہیں۔ ملک ارجن کھرگے نے تحریک التوا پیش کی تھی۔ انہوں نے سشماسوراج کی سابق آئی پی ایل کمشنر للت مودی کو مدد کے سلسلہ میں کئی سوالات اٹھائے۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملہ میں سشماسوراج کو اس لئے بھی زیادہ دلچسپی ہے کیونکہ ان کے شوہر اور دختر للت مودی کے وکلاء ہیں۔ سشماسوراج نے یہ دعویٰ بھی مسترد کرتے ہوئے کہا کہ دونوں کبھی بھی للت مودی کے پاسپورٹ کی منسوخی کے مقدمہ میں پیش نہیں ہوئے اور ایک روپیہ بھی بطور فیس نہیں لی لیکن شخصی حملوں کا سلسلہ جاری رہا اور سشماسوراج نے جواب دیتے ہوئے راہول گاندھی کے علاوہ سابقہ کانگریس حکومتوں کو نشانہ بنایا جن میں راجیو گاندھی دورحکومت بھی شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ راجیو گاندھی حکومت نے ہی یونین کاربائیڈ کے سربراہ وارین اینڈرسن کو بھوپال گیس سانحہ کے پس منظر میں ہندوستان سے فرار ہونے میں مدد کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس حکومت نے ہی بوفورس ملزم قطروچی کے ہندوستان سے فرار ہونے میں مدد کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ راہول گاندھی جنہیں دو ماہ کی چھٹی لینے میں دلچسپی رہتی ہے،

انہیں چاہئے کہ تنہائی میں کانگریس حکومتوں کی تاریخ پر غور کریں۔ اس کے بعد آکر وہ بتائیں کہ ان کی ماں کو قطروچی نے کتنی رقم دی تھی۔ وارین اینڈرسن کو جو 15000 لوگوں کی موت کا ذمہ دار تھا، ملک سے جانے کی اجازت دی گئی۔ بعدازاں راہول گاندھی نے سشماسوراج پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے للت مودی کی اس لئے مدد کی کیونکہ ان کے ارکان خاندان (شوہر اور دختر) للت مودی کے وکیل ہیں۔ وہ سشماسوراج سے یہ پوچھنا چاہتے ہیں کہ للت مودی کو بچانے کیلئے انہیں کتنی رقم ملی۔ وہ دنیا کی ایسی واحد شخص ہیں جنہوں نے خفیہ طور پر انسانی بنیادوں پر کسی شخص کی مدد کی ہے۔ سشماسوراج نے کہا کہ وہ ایسا بالکل نہیں کرتی۔ اگر ایسا کسی نے کیا ہے تو وہ راجیو ہیں جنہوں نے اینڈرسن کی مدد کی تھی۔ راہول گاندھی نے نریندر مودی پر خاموشی اختیار کرنے کا الزام عائد کیا اور گاندھی جی کے تین بندروں کی مثال دی اور دعویٰ کیا کہ مودی کو سچائی نظر نہیں آتی، وہ سچ نہیں بول سکتے اور انہیں سچ سنائی نہیں دیتا۔ راہول گاندھی نے کہا کہ مودی ایوان میں موجود نہیں ہے کیونکہ ان میں سچائی کا سامنا کرنے کا حوصلہ نہیں ہے۔

TOPPOPULARRECENT