Sunday , September 24 2017
Home / دنیا / سعودی عرب مشرق وسطیٰ میں استحکام کیلئے امریکہ سے تعاون کو تیار

سعودی عرب مشرق وسطیٰ میں استحکام کیلئے امریکہ سے تعاون کو تیار

واشنگٹن۔ 5 سپٹمبر۔(سیاست ڈاٹ کام) سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے کہا ہے کہ ان کا ملک مشرق وسطیٰ میں استحکام کو یقینی بنانے کیلئے امریکہ کے ساتھ مل کر کام کرنے کو تیار ہے ۔ انھوں نے دوطرفہ تعلقات کے حوالے سے کہا کہ سعودی عرب کو امریکہ کو مزید کاروباری مواقع مہیا کرنے چاہئیں۔شاہ سلمان کا جنوری میں سعودی تخت سنبھالنے کے بعد امریکہ کا یہ پہلا دورہ ہے۔سعودی شاہ نے امریکہ پہنچنے کے بعد سب سے پہلے وزیرخارجہ جان کیری سے بات چیت کی تھی۔ان دونوں کی واشنگٹن کے نواح میں واقع میری لینڈ میں اینڈریوزائیرفورس بیس پر ملاقات ہوئی تھی۔جان کیری نے سعودی وزیرخارجہ عادل الجبیر سے بھی امریکی محکمہ خارجہ میں دورے کے ایجنڈے کے حوالے سے بات چیت کی ۔سعودی عرب کی سرکاری پریس ایجنسی(ایس پی اے) کے مطابق انھوں نے خطے کی تازہ صورت حال اور اہم علاقائی اور عالمی امور کے علاوہ دوطرفہ تعلقات بڑھانے کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا ہے۔صدر براک اوباما کے قومی سلامتی کے نائب مشیر بن رہوڈز نے ایک انٹرویو میں کہا کہ ’’شاہ سلمان ایک اہم مرحلے پر یہ اہم دورہ کررہے ہیں۔اس وقت خطے میں بیک وقت بہت سی پیش رفتیں ہورہی ہیں اور اس ضمن میں ہمارا اور سعودی عرب کا مفاد مشترک اور موقف یکساں ہے‘‘۔انھوں نے کہا کہ ’’ہم اپنے ان اتحادی ممالک کو یہ یقین دلانا چاہتے ہیں کہ اگر ہم جوہری معاہدے پر عمل درآمد کرتے ہیں تو تب بھی ہم ان کے ساتھ تعاون جاری رکھیں گے اور ان کی تشویش کو دور کرنے کی کوشش کریں گے‘‘۔بن رہوڈز نے شام میں جاری بحران کے حوالے سے کہا کہ ”ایران کی جانب سے بشارالاسد کی مسلسل حمایت اس امن اور استحکام کی راہ میں ایک بڑی رکاوٹ ہے،جس کے شامی عوام حق دار ہیں۔اس لیے ہم یہ واضح کرنا چاہتے ہیں کہ ایران کے ساتھ جوہری معاہدے پر دستخط کا یہ مطلب نہیں ہے کہ ہم ہر معاملے میں اس کے ساتھ کھڑے ہوگئے ہیں‘‘۔

TOPPOPULARRECENT