Saturday , August 19 2017
Home / ہندوستان / سعودی عرب میں انجینئر بطور غلام فروخت ،خاندان وطن واپسی کا خواہاں

سعودی عرب میں انجینئر بطور غلام فروخت ،خاندان وطن واپسی کا خواہاں

کولکتہ ۔ 9 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) ایک آٹو موبائیل انجینئر جو بہتر ملازمت کی خاطر سعودی منتقل ہوا تھا، مبینہ طور پر ایک سعودی شہری کو بحیثیت غلام فروخت کردیا گیا اور وہ اونٹوں کے فارم میں ان کی دیکھ بھال کا کام کررہا ہے۔ جینت بسواس کے ارکان خاندان نے وزارت خارجہ سے انہیں سعودی عرب سے وطن واپس لانے کیلئے مدد طلب کی ہے۔ تاہم انہیں وزارت خارجہ سے ہنوز جواب وصول نہیں ہوا۔ جاریہ سال کے اوائل میں نئی دہلی اور ممبئی کے ایجنٹوں کے جینت بسواس نے ربط پیدا کیا تھا اور ایجنٹوں نے انہیں سعودی عرب میں بھاری تنخواہ کے عوض آٹو موبائیل کے شعبہ میں ملازمت دلانے کیلئے ایک لاکھ روپئے معاوضہ حاصل کیا تھا اور ٹورسٹ ویزا پر بذریعہ طیارہ ریاض روانہ کردیا گیا۔ 3 ماہ کی مدت میں بھی اسے آٹو موبائیل کے شعبہ میں کوئی اچھی ملازمت حاصل نہیں ہوئی۔ چنانچہ انہیں اس سعودی شہری نے اونٹوں کی دیکھ بھال کرنے والے غلام کی  حیثیت سے خرید لیا۔ تاہم وہ فرار ہوکر ریاض میں ہندوستانی سفارتخانہ سے ربط پیدا کرنے میں کامیاب ہوگیا۔ اس فرار پر برہم اس کے کفیل نے اس پر 10 ہزار ریال سرقہ کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے پولیس میں شکایت درج کرائی چنانچہ اسے گرفتار کرکے قیدخانہ بھیج دیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT