Saturday , October 21 2017
Home / عرب دنیا / سعودی عرب نے مصر کو تیل کی سربراہی روک دیا

سعودی عرب نے مصر کو تیل کی سربراہی روک دیا

قاہرہ ۔ 7 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) مصر نے کہا ہیکہ سعودی عرب نے اسے غیرمعینہ مدت کیلئے تیل کی سربراہی روک دیا ہے۔ غالباً شام کے تنازعہ پر دونوں ملکوں کے تعلقات میں بڑھتی ہوئی کشیدگی کے درمیان ریاض نے قاہرہ پر دباؤ ڈالنے کیلئے یہ قدم اٹھایا ہے۔ مصر کی تیل کے ترجمان حمدی عبدالعزیز نے کہا ہیکہ دنیاکی سب سے بڑی تیل کمپنی سعودی عرب کی آرامکو نے واضح نظام الاوقات یا وجودہات بتائے بغیر ہی مصر کو تیل کی سربراہی روک دی ہے۔ مصر نے کہا کہ گذشتہ ماہ اس کو مطلع کیا گیا تھا کہ اکٹوبر سے تیل کی رسدات روک دی جائیں گی لیکن ابتداء میں یہ واضح نہیں ہوسکا کہ یہ دراصل اقوام متحدہ کی تلاشی کونسل میں شام کے مسئلہ پر دو قراردادوں پر رائے دہی کیلئے مصر کی سرزنش کے طور پر یہ قدم اٹھایا گیا ہے کیونکہ مصر نے ایک ایسی قرارداد کے حق میں ووٹ دیا تھا جس کی سعودی عرب نے مخالفت کی تھی۔ سعودی عرب نے تیل کی رسدات روکنے کے بارے میں تاحال کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔ عبدالعزیز نے مصر کے وزیرتیل طارق الملائی ایران کو روانگی کی تردید کے ساتھ یہ ریمارک کیا ہے۔ خلیج فارس کے علاقہ میں ایران ہی سعودی عرب کا سب سے بڑا علاقائی حریف ہے۔

TOPPOPULARRECENT