Sunday , June 25 2017
Home / عرب دنیا / سعودی عرب کے نائب ولیعہد محمد بن سلمان امریکہ روانہ

سعودی عرب کے نائب ولیعہد محمد بن سلمان امریکہ روانہ

ٹرمپ سے ملاقات ، اقتصادی اصلاحات ، سرمایہ کاری دورہ کی اہم ترجیحات
ریاض ۔13 مارچ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) سعودی عرب کے بااثر نائب ولیعھد و وزیر دفاع محمد بن سلمان نے اقتصادی اصلاحات کے منصوبہ کے تحت بیرونی سرمایہ کاری کو راغب کرنے کے مقصد سے آج امریکہ روانہ ہوگئے جہاں وہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ سے ملاقات کریں گے ۔ ٹرمپ کے جنوری میں صدارت پر فائز ہونے کے بعد ان سے ملاقات کرنے والے وہ پہلے اہم سعودی ذمہ دار ہیں۔ شہزادہ محمد کے د ورہ امریکہ کا جمعرات سے سرکاری طورپر آغاز ہوگا۔ جس میں وہ باہمی تعلقات کے استحکام اور باہمی مفادات کے علاقائی اُمور و مسائل پر توجہ مرکوز کریں گے۔ سعودی تخت پر وراثت میں دوسرے مقام کے حامل شہزادہ محمد ، شاہ سلمان کے فرزند ہیں اور وزیر دفاع کے عہدہ پر بھی فائز ہیں۔ تاہم وہ اقتصادی اُمور پر زیادہ توجہ مرکوز کیا کرتے ہیں۔ مملکت سعودی عرب کے تیل پر انحصار کو کم کرنے کے مقصد سے گزشتہ سال شروع کردہ وسیع پیمانہ پر معاشرتی و اقتصادی اصلاحات پر مبنی منصوبہ ویژن 2030 ء کے وہ ایک پرجوش حامی و محرک ہیں۔ واشنگٹن اور ریاض کے درمیان سعودی تیل کے عوض امریکی تحفظ و سلامتی پر مبنی دہائیوں قدیم تعلقات ہیں۔ لیکن ٹرمپ کے پیشرو براک اوباما انتظامیہ کے آٹھ سالہ دور اقتدار کے دوران تیزی سے سردمہری وکشیدگی کا شکار ہوگئے تھے ۔ سعودی قائدین کا یہ شدید احساس تھا کہ براک اوباما کا ریاض کے علاقائی حریف ایران کی طرف جھکاؤ ہے اور وہ ( اوباما ) شام میں جاری خانہ جنگی میں ملوث ہونے سے پس و پیش کررہے ہیں ۔ سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے اُمید ظاہر کی ہے کہ ٹرمپ اس علاقہ کے اُمور بالخصوص ایران کوقابو میں رکھنے کیلئے زیادہ سے زیادہ سرگرم رہیں گے ۔سعودی عرب نے ایران پر اس کے پڑوسیوں بالخصوص یمن کے اُمور میں مداخلت کا الزام عائد کیا ہے ۔ بالخصوص یمن میں ایران ان حوثی باغیوں کی تائید کررہا ہے جو بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ یمنی حکومت کے خلاف لڑائی میں مصروف ہیں۔ نائب ولیعھد محمد ایک ایسے وقت امریکہ کا دورہ کررہے ہیں جب ان کے والد 81 سالہ سلمان بن عبدالعزیز ایک ماہ طویل ایشیائی دورہ پر ہیں۔ تجزیہ نگاروں نے ولیعھد 56 سالہ محمد بن نائب اور نائب ولیعھد محمد سلمان کے درمیان مخاصمت و مسابقت کی نشاندہی کی ہے ۔ ایک بیرونی سفارت کار نے اے ایف پی سے کہا کہ شاہ سلمان شاہی خاندان کے متعدد ارکان کے ساتھ بیرونی دورہ کررہے ہیں اور ان کے اس دورہ کو شہزادہ محمد سے وفاداری کی راہ ہموار کرنے میں مدد کی ایک کوشش کے طورپر دیکھا جارہا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT