Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / سفید راشن کارڈ کیلئے سخت قواعد ، 11لاکھ سے زائد درخواستیں مسترد

سفید راشن کارڈ کیلئے سخت قواعد ، 11لاکھ سے زائد درخواستیں مسترد

مرکزی حکومت کی فوڈ سیکوریٹی اسکیم کے کارڈس کا بھی جائزہ ، نئے کارڈس کی اجرائی میں حکومت کا محتاط رویہ
حیدرآباد۔ 23 ۔ مارچ ( سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت نے حیدرآباد اور دیگر اضلاع میں سفید راشن کارڈ کیلئے داخل کی گئی درخواستوں کیلئے سخت قواعد مرتب کئے ہیں ، جس کے سبب 11 لاکھ سے زائد درخواستوں کو مسترد کردیا گیا ۔ محکمہ سیول سپلائیز کے اعداد و شمار کے مطابق 10 اضلاع میں ایک کروڑ 13 لاکھ 7 ہزار 897 افراد نے سفید راشن کارڈ کیلئے درخواستیں داخل کی تھیں ، جن میں سے 11 لاکھ 22 ہزار 168 درخواستوں کو مسترد کردیا گیا ۔ 90 لاکھ 15 ہزار 729 درخواستیں درست پائی گئیں۔ سرکاری ذرائع کے مطابق ان درخواستوں پر مرحلہ وار طور پر کارروائی کی جائے گی۔ ہر ضلع میں درخواستوں کی جانچ کا کام جاری ہے اور توقع ہے کہ نئے مالیاتی سال میں راشن کارڈس کی اجرائی عمل میں آئے گی۔ حیدرآباد میں 9 لاکھ 72 ہزار 172 درخواستیں داخل کی گئیں، جن میں سے ایک لاکھ 60 ہزار 598 درخواستوں کو مسترد کردیا گیا اور 8 لاکھ 11 ہزار 574 درخواستیں قبول کی گئیں، جن کی جانچ کا کام جاری ہے۔ حیدرآباد کے سرکل 1 میں 83555 درخواستوں کو اہل پایا گیا جبکہ اس سرکل میں 93513 درخواستیں داخل کی گئی تھیں۔ سرکل 2 میں ایک لاکھ پانچ ہزار 220 درخواستیں قبول کی گئیں۔ اسی طرح سرکل 3 میں ایک لاکھ 18 ہزار 827 ، سرکل 4  58335 ، سرکل 5 ایک لاکھ 17 ہزار 544 ، سرکل 6  75037 ، سرکل 7 ایک لاکھ 3 ہزار 432 ، سرکل 8  88094 اور سرکل 9 میں 61541 درخواستوں کو اہل قرار دیا گیا ہے۔ عادل آباد میں 744361 درخواستوں کو اہلیت کے زمرہ میں رکھا گیا۔ کریم نگر میں 11 لاکھ 8 ہزار 89 ، کھمم 7 لاکھ 30 ہزار 66 ، محبوب نگر 10 لاکھ 54 ہزار 630 ، میدک 7 لاکھ 91 ہزار 721 ، نلگنڈہ 9 لاکھ 91 ہزار 160 ، نظام آباد 6 لاکھ 32 ہزار 539 ، رنگا ریڈی 11 لاکھ 53 ہزار 306 اور ورنگل میں 9 لاکھ 88 ہزار 283 درخواستوں کو  راشن کارڈ کی اجرائی کا مستحق قرار دیا گیا ۔ بتایا گیا ہے کہ حکومت نے ضلع کلکٹرس کو ہدایت دی ہے کہ وہ مرکزی حکومت کے فوڈ سیکوریٹی اسکیم کے تحت جاری کئے گئے کارڈ کا بھی جائزہ لیں اور بیک وقت ہر خاندان کے پاس ایک کارڈ کی موجودگی کو یقینی بنائیں۔ سابق میں کئی غیر مستحق خاندانوں کو سفید راشن کارڈ کی اجرائی کی شکایات ملی ہیں، لہذا حکومت نئے کارڈس کی اجرائی میں کافی احتیاط سے کام لے گی۔

TOPPOPULARRECENT