Saturday , September 23 2017
Home / ہندوستان / سماج وادی پارٹی دور کے بیکار پراجکٹس بند

سماج وادی پارٹی دور کے بیکار پراجکٹس بند

لکھنو۔16جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) سابق یو پی حکومت کے بیکار پراجکٹس کیلئے مالیہ مختص کرنے کا سلسلہ بند کردیا گیا ہے ۔ یوگی حکومت نے کہا کہ اس کا مقصد کاشتکاروں کے قرضہ جاتکی معافی کی اسکیم کیلئے مالیہ فراہم کرنا ہے ۔ ریاستی وزیر زراعت سوریہ پرتاپ شاہ نے کہا کہ سابق حکومت کی جانب سے کئی اسکیموں پر بیکار پیسہ ضائع کیا جارہا تھا جیسے دریائے گومتی محاذ اسکیم اور جانشیور مشرا پارک وغیرہ کیلئے مالیہ مختص کرنا بند کردیا گیا ہے ۔ کیونکہ موجودہ حکومت کاشتکاروں کے 36ہزار کروڑ روپئے کے قرضوں کے بقایا جات معاف کرنے کیلئے رقم فراہم کرنا چاہتی ہے ۔ ایسے کاشتکار جو قابل نظرانداز ہے یا چھوٹے پیمانے پر زراعت کرتے ہیں ان کے قرضوں کے بقائے معاف کئے جائیں گے ۔ سابق سماج وادی پارٹی حکومت نے کئی بیکار پراجکٹس پر رقومات ضائع کی تھیں ۔ ریاستی وزیر زراعت نے کہا کہ یو پی حکومت کو کاشتکاروں کی ضروریات کا احساس ہے اور وہ ہر ممکن کوشش کرے گی ‘ تاکہ ان کی حالت کو بہتر بنایا جائے اور ان کی آمدنی کو باقاعدہ بنایا جاسکے ۔ 67682کروڑ روپئے موجودہ بجٹ میں زرعی قرضوں کی معافی کیلئے مختص کئے گئے ہیں ۔ موجودہ قرضوں کے بقایا جات 29771 کروڑ روپئے ہیں اور مزید 19.56 کروڑ روپئے آئندہ کی فصلوں کیلئے مختص کئے گئے ہیں ۔ علاوہ ازیں اراضی کا سروے اور جانچ کرنے کیلئے 261.66کروڑ روپئے مختص کئے گئے ہیں ۔ 88.82 لاکھ میٹرک ٹن فرٹیلائیزرس فراہم کرنے کا نشانہ مقرر کیا گیا ہے ۔ انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا کہ حکومت کو روایتی ‘ زراعتی ٹکنالوجیوں کا احیاء کرنا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ اسکیم قومی روایتی زرعی ترقی اسکیم کے تحت چلائی جائے گی اور 30اضلاع میں جن میں بنڈیل کھنڈ کے تمام اضلاع شامل ہوں گے ۔ زرعی ترقی دی جائے گی ۔ ریاستی حکومت نے 300 کسٹم ہائیرنگ سنٹرس اور 582 زرعی مشنری بینکس زرعی نظام کے تحت قائم کرنے کا منصوبہ بنایا ہے تاکہ معمولی اور چھوٹے کسانوں کی مدد کی جاسکے ۔

TOPPOPULARRECENT